مضامین و مقالات

میری پسندیدہ شخصیت میری ’’ماں‘‘! تحریر✒️مولانا فیاض احمد صدیقی

میری پسندیدہ شخصیت میری ’’ماں‘‘! 

تحریر ✒️مولانا فیاض احمد صدیقی رحیمی انعام وہار سھبا پور دھلی این سی آر :
                        
{چوم لوں تیرے پاؤں پلکوں سے ماں:
اشکوں سے آنکھوں کو باوضو کر کے:}
’’ماں‘‘ اس لفظ کی جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے۔ ماں دنیا کا ایک انمول ستارہ ہے، ماں اللہ تعالیٰ کا دیا ہوا ایک انمول تحفہ ہے جس نے اس کی قدر کی وہ بہت سی خوش نصیب انسان ہے جس نے اس کی خدمت کی اس کو جنت نصیب ہے کیونکہ ماں کے قدموں تلے جنت ہے جس گھر میں ماں ہے، وہ گھر جنت سے کم نہیں اور جس گھر میں ماں نہیں۔
، وہ گھر قبرستان کی مانند ہے۔ میں اپنی ماں سے بے انتہا محبت کرتا ہوں اور دعا کرتا ہوں کہ ان کا سایہ تاحیات میرے سر پر رہے۔اگر کوئی مصیبت یا کوئی پریشانی آجاتی ہے اگر میں بیمار ہوجاؤں تو میرا خیال رات بھر جاگ کر رکھتی ہے، میری ماں مجھے اپنے ہاتھ سے کھانا بناکر کھلاتی ہے اور زندگی میں مثالی شخصیت میری ماں ہے اور ہمیشہ میری ماں ہی رہے گی۔ میری ماں میری خواہش پوری کرتی ہے میں جو بھی بولوں وہ سنتی ہے جس گھر میں تعلیم یافتہ تہذیب یافتہ نیک ماں ہے، وہ انسانیت کی درس گاہ ہے۔ بچے کا مستقبل ماں کی گود میں پرورش پاتا ہے،دنیا کا سب سے انمول زیور ہے۔ دنیا کا کوئی رشتہ ماں سے زیادہ پیارا نہیں ماں کا پیار سب سے بہترین اور خوبصورت ہے، اگر تم کوئی بھی فیلڈیا میدان میں کامیاب ہونا چاہتے ہو تو ماں کی خدمت کیا کرو : اللہ تعالیٰ ہم سب کو اپنے والدین کی خدمت کرنے کی توفیق عطا فرمائے :آمین ثم آمین :
{پوچھتا ہے جب کوئی دنیا میں محبت ہے کہاں؟ 
مسکرا دیتا ہوں اور یاد آ جاتی ہے، ماں}

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close