دیوبند

غیر امداد یافتہ تعلیمی ادارے فوری طور پر مطلوبہ تفصیلات ویب سائٹ پر اپلوڈ کریں

ہدایات پر عمل نہ کرنے والے اداروں کے خلاف قانونی کار روائی عمل میں لائی جائے گی۔اپر چیف سکریٹری یوپی بورڈ

دیوبند، 10؍ جون (رضوان سلمانی) یوپی بورڈ اور ایجوکیشن آفس نے حکم نامہ جاری کرتے ہوئے تمام غیر امداد یافتہ ہائی اسکولوں وانٹر کالجوں سے کہا ہے کہ وہ اپنے اداروں میں موجود سہولیات ،اساتذہ کی مضامین کے اعتبار سے تعداد ،سائنس ،بائیو لوجی ،ہوم سائنس ودیگر پریکٹیکل لیب کی تفصیلات اور اسکول وکالج کی چہار دیواری کی مکمل تفصیلات مادھیمک شکشا پریشد اترپردیش کی ویب سائٹ پر فوری طور سے اپلوڈ کریں ۔جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ یوپی بورڈ نے پریشد کی ویب سائٹ پر مذکورہ تفصیلات اپڈیٹ نہ ہونے کے معاملہ کو نہایت سنجیدگی سے لیا ہے

ایجوکیشن افسران کا کہنا ہے کہ یوپی بورڈ امتحانات 2022میں غیر امداد یافتہ تعلیمی اداروں کی جانب سے اساتذہ کی جو تفصیلات پریشد کی ویب سائٹ پر اپلوڈ کی گئیں وہ اداروں کے ریکارڈ سے مماثلت نہیں رکھتی کیونکہ ویب سائٹ پر جو تفصیلات اپلوڈ کی گئی ہیں اداروں میں ان کی تفصیلات اس سے مختلف ہے جس کی وجہ سے یوپی بورڈ کو بڑی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا ہے لیکن اب یوپی بورڈ اس طرح کے واقعات کو روکنا چاہتا ہے جس کے باعث اپر سکریٹری اترپردیش مادھیمک شکشا پریشد اور علاقائی دفتر کے انچارج ونے کمار گل نے تمام اسکولوں وکالجوں کے پرنسپلوں کو سخت احکامات دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپنے اپنے اداروں کی مذکورہ تفصیلات لازمی طور پر اپڈیٹ کردیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ ہدایات پر عمل نہ کرنے والے اداروں کے خلاف قانونی کار روائی عمل میں لائی جائے گی۔

واضح ہو کہ سال 2022کے یوپی بورڈ ہائی اسکول وانٹر میڈیٹ کے امتحانات میں سرکاری اور امداد یافتہ اسکولوں وکالجوں کے اساتذہ کی ڈیوٹی کاپیوں کی چیکنگ اور پریکٹیکل امتحانات کے لئے لگائی گئی تھی جبکہ غیر امداد یافتہ ہائی اسکولوں وانٹر کالجوں کے اساتذہ کو اس میں شامل نہیں کیا گیا جس کیوجہ سے دوسرے اساتذہ اور اساتذہ کی نتظیموں نے سخت اعتراضات درج کرائے ۔اپر سکریٹری کا کہنا ہے کہ بورڈ امتحانات میں اساتذہ کی ڈیوٹی لگانے کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ یوپی بورڈ کی ویب سائٹ پر تعلیم اداروں کی جانب سے اپلوڈ کی جانے والی تفصیلات صحیح نہیں ہیں ۔اسلئے اس حکم نامہ کے ذریعہ تمام اسکولوں وکالجوں کے پرنسپلوں کو یہ ہدایت جاری کی گئی ہے کہ وہ اپنے اداروں موجود تمام سہولیات کی تفصیلات لازمی طور پر اور ترجیحی بنیاد پر اپڈیٹ کرائیں۔انہوں نے کہا کہ صحیح تفصیلات پریشد کی ویب سائٹ پر اپڈیٹ نہ کرانے والے تعلیمی اداروں کے خلاف کار روائی کئے جانے کا عمل شروع کیا جائے گا ۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button