قومی

جودھپور: مبینہ تبدیلی ٔمذہب کیخلاف ہنگامہ،بھگوا تنظیموں کاہنومان چالیسا پاٹھ

جودھ پور، 5 جون (ہندوستان اردو ٹائمز) اتوارکو عیسائی مشنریوں کی طرف سے مبینہ تبدیلی مذہب کے خلاف احتجاج میں ہندو تنظیموں کی جانب سے سی ایم اشوک گہلوت کے آبائی ضلع جودھ پور میں واقع بالاجی مندر کے سامنے ہنومان چالیسا کا پاٹھ کیا گیا ۔ہندو تنظیموں کا کہنا ہے کہ اس نے شہر میں بڑھتے ہوئے تبدیلی ٔمذہب کے خلاف احتجاج میں مسلسل ہنومان چالیسا کا پاٹھ کیا ہے ۔ اس کے بعد وہ پال روڈ پر واقع چرچ کے باہر بھی جائیں گے اور ہنومان چالیسا کا پاٹھ کریں گے۔

ہندو تنظیموں کے اعلان کے بعد انتظامیہ نے شہر میں سکیورٹی کا نظام مزید سخت کر دیا ہے۔ جودھ پور پولس کمشنریٹ ویسٹ کے اے ڈی سی پی ہرفل سنگھ جاٹ نے بتایا کہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے اے ڈی سی پی، اے سی پی، ایس ایچ او، سب انسپکٹر اور آر اے سی کی بٹالین کو تعینات کیا گیا ہے۔وہیں اگر کوئی امن و امان کو اپنے ہاتھ میں لینے کی کوشش کرتا ہے تو اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

ہندو تنظیم اس معاملے پر پولیس کی کارروائی سے مطمئن نہیں ہے۔ ہندو تنظیموں کا کہنا ہے کہ ایف آئی آر میں مذہب کی تبدیلی کی دفعہ نہیں لگائی گئی، جس کے لیے ہم احتجاج کر رہے ہیں۔ اس سے قبل جودھ پور میں ایک تامل جوڑے کی جانب سے بہار کے ایک جوڑے کو مذہب کی تبدیلی کے لیے اکسانے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔لوگوں کے احتجاج کے بعد پولیس نے آکر معاملہ پرامن کرایا اور تامل جوڑے کو امن میں خلل ڈالنے پر گرفتار کرلیا گیا۔ اس معاملے پر پولیس افسر سمردن چرن نے کہا کہ وہ شکایت ملنے کے بعد موقع پر گئے تھے۔ بہاری جوڑے نے بتایا کہ انہیں رات کے کھانے پر مدعو کیا گیا تھا۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button