یوپی

مخلوق کی حاجت روائی خالق تک پہنچنے کا زینہ: مولانا محمد علی نعیم رازی

یوتھ فور پیس کی جانب سے ”آئیے ایک دوسرے کا ہاتھ تھامیں “‌ مہم کا آغاز

لکھنؤ (پریس ریلیز ) ملک میں کورونا وائرس کے تیزی سے بڑھنے کی وجہ سے ایک مرتبہ پھر لاکڈاؤن کے حالات پیدا ہوتے جارہے ہیں جس کی وجہ سے روز مرہ کی زندگی بسر کرنے والا طبقہ معاشی کشمکش کا شکار ہونے لگا ہے ان حالات میں انکا خیال رکھنا ہم سب کا فرض ہے
مذکورہ بالا خیالات کا اظہار معروف عالم دین اور سماجی کارکن مولانا محمد علی نعیم رازی نے سماجی تنظیم یوتھ فار پیس کی جانب سے ڈالی گنج کے قریب ضرورت مندوں کے درمیان رمضان کٹس کی تقسیم کرتے ہوئے کیا
مولانا محمد علی نعیم رازی نے کہا کہ گزشتہ سال کی بنسبت امسال معاشی حالات بیحد خراب ہے نیز گزشتہ سال حسب حیثیت تعاون کرنے والے افراد بھی امسال آزمائشی دور سے گزررہے ہیں جسکے سبب صورتحال دگرگوں ہے اور ایک بڑی تعداد مدد کی طلبگار ہے جن کا ساتھ دینا ہم سب کی ذمہ داری ہے
مولانا محمد علی نعیم رازی نے کہ بیماری سے حفاظت کے لئے یقیناً لاکڈاؤن کی ضرورت ہے لیکن حکومت کو اقتصادی دور سے کرب و الم کے شکار افراد کے لئے سنجیدگی سے سوچنا چاہیے اور ان کی حاجت روائی کے تعلق سے اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرتے ہوئے زمینی سطح پر عملی اقدامات کرنے چاہئے
مولانا محمد علی نعیم رازی نے ملت اسلامیہ کے اہل ثروت افراد سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ یہ وقت نازک ہے اور ایسے وقت میں خلق خدا کی مدد قرب الٰہی کے حصول کا بہترین ذریعہ ہے لہذا اس موقع کو غنیمت سمجھتے ہوئے آگے آئیں اور خدمت خلق کے لئے وسائل کی فراہمی میں معاونت کریں
مولانا محمد علی نعیم رازی نے آخر میں موجود تمام افراد سے دست بستہ گزارش کرتے ہوئے کہا کہ یہ وقت انابت الی اللہ کا ہے لہذا ہم میں سے ہر ایک فرد تحفظ انسانیت کے لئے بارگاہ ایزدی میں گریہ و زاری کرتے ہوئے اپنے گناہوں کی بخشش طلب کریں اور رضائے الٰہی کے حصول کے لئے تگ و دو کریں
اس موقع پر مولانا محمد علی نعیم رازی نے ”آئیے ایک دوسرے کا ہاتھ تھامیں “‌ کے عنوان سے ایک مہم کا آغاز کیا نیز اس کا آرگنائزر سماجی کارکن اے آر رحمان سیفی کو منتخب کیا اور انسے امید ظاہر کی کہ وہ لکھنؤ و اطراف میں اس تعلق سے کوشاں ہوکر خدمت خلق کا فریضہ انجام دینگے
اس موقع پر اے آر رحمان سیفی،انس صدیقی، عامر سیفی ،محمد شمیم، ظفر ، سلیم اور خدیجہ بانو وغیرہ موجود رہے

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close