یوپی

پھانسی کی منتظر ۷؍لوگوں کے قتل کی مجرم شبنم رام پور سے بریلی جیل منتقل ،جانیں آخر کیاہےوجہ؟

رام پور، ۲؍مارچ ( آئی این ایس انڈیا ) یوپی کے رام پور جیل میں بند شبنم کو اب بریلی جیل منتقل کردی گئی ہے ۔ پھانسی کی منتظر شبنم کیخلاف یہ کارروائی جیل میں خواتین پولیس اہلکاروں کے ساتھ منظر عام پر آنے کے بعد کی گئی ہے۔ شبنم کی ایک تصویر سب سے پہلے 24 فروری کوایک مقامی ہندی اخبار نے شائع کی تھی۔ ان میں وہ رام پور جیل کی خواتین پولیس اہلکاروں کے ساتھ نظر آرہی ہے ۔اس معاملے میں جیل انتظامیہ نے دو محافظ کو بھی معطل کردیا ہے۔ معطل ہونے والے افراد میں خاتون کانسٹیبل ناہید بی اور مرد کانسٹیبل شعیب خان شامل ہیں، دونوں شوہر اور بیوی ہیں۔اپنے گھر کے 7 افراد کے قتل کے الزام میں سزا یافتہ شبنم ہندوستان میں پھانسی کی سزا پانے والی پہلی خاتون ہوسکتی ہے۔ خیال رہے کہ 15 اپریل 2008 کو باون کھیڑی امروہہ میں شبنم نے اپنے عاشق سلیم کے ساتھ مل کر اپنے والد شوکت علی ، والدہ ہاشمی ، بھائی انیس احمد ، اس کی اہلیہ انجم ، بھانجی رابعہ اور بھائی رشید نیز انیس کے 10 ماہ کے بیٹے عرش کو سفاکانہ طریقہ سے قتل کردیاتھا۔شبنم اورعاشق سلیم کو جولائی 2010 میں امروہہ عدالت نے سزائے موت سنائی تھی، بعدازاں الہ آباد ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ نے بھی اس سزا کو برقرار رکھا۔ صدر نے ان کی پہلی رحم کی درخواست بھی مسترد کردی ہے، شبنم کی جانب سے رحم کی ایک دوسری درخواست دائر کی گئی ہے۔ قتل کے بعد کی جانے والی تفتیش میں انکشاف ہوا کہ شبنم حاملہ تھی ، لیکن گھر والے سلیم سے اس کی شادی کے لئے تیار نہیں تھے۔ اسی وجہ سے شبنم نے عاشق سلیم کے ساتھ مل کر پورے خاندان کو ہلاک کردیا۔ شبنم نے 14 دسمبر 2008 کو جیل میں ہی ایک بیٹے کو جنم دیا ،بیٹا جیل میں اس کے ساتھ تھا۔ 15 جولائی 2015 کو وہ جیل سے باہر آیا۔شبنم نے بیٹے تاج کو اپنے کالج کے دوست عثمان سیفی کے پاس چھوڑ دیا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close