یوپی

ہاتھرس : بیٹی سے چھیڑخانی کیخلاف مقدمہ درج کرنے پر باپ کا قتل

لکھنؤ، ۲؍مارچ ( آئی این ایس انڈیا ) یوپی کے ہاتھرس ضلع کے نوجر پور نامی گاؤں میں بیٹی کے ساتھ چھیڑخانی کی پولیس محکمہ میں شکایت کرنے اورمقدمہ واپس لینے کا دباؤ بناکر بدنصیب باپ کو پیر کی شام گولی مار کر ہلاک کردیا گیا۔ بتایا جارہا ہے کہ ملزم گورو شرما ان پر دباؤ ڈال رہا تھا کہ وہ چھیڑ خانی کا مقدمہ واپس لے لے۔خیال رہے کہ مقتول کی بیٹی نے چھ افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے، ان میں سے ایک کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ متاثرہ افراد کے اہل خانہ کا الزام ہے کہ گور و انتہائی درجے کا غنڈہ ہے ۔متاثرہ افراد کے اہل خانہ نے تمام ملزمان کی گرفتاری تک آخری رسومات ادا نہ کرنے پر اصرار کیا ہے ، لیکن پولیس کی یقین دہانی کے بعد اہل خانہ راضی ہوگئے۔ امریش شرما (52) کے اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ ملزم گورو سے پراناتنازع تھا۔ پیر کے روز امریش کی بیٹی اور گورو کی اہلیہ گاؤں کے مندر گئی تھیں،یہ خواتین آپس میں لڑ پڑے۔شام کو امریش اپنے کھیت پر کا م کرہا تھا ، اسی دوران گورو اپنے تین دوستوں کے ساتھ وہاں پہنچا اور فائرنگ شروع کردی۔ گولی لگنے کے بعد امریش کو علاج کے لئے ہاتھرس لے جایا گیا ، جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دے دیا۔ایس پی ونیت جیسوال کے مطابق امریش نے 16 جولائی ، 2018 کو گاؤں کے گورو کے خلاف بیٹی سے چھیڑخانی کا مقدمہ درج کیا تھا۔ اس معاملے میں گورو 15 دن تک جیل میں بھی رہا ہے۔ ضمانت پر باہر آنے کے بعد وہ امریش پر مقدمہ واپس لینے کے لئے دباؤ ڈال رہا تھا۔خیال رہے کہ یوپی کے سابق وزیر اعلی اور ایس پی کے سربراہ اکھلیش یادو نے اس واقعے پر یوگی حکومت کو نشانہ بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رام راجیہ لانے والوں کے راج کے میںبیٹیاں محفوظ نہیں ہیں اور وزیر اعلی بنگال میںانتخابی ریلیوں کے مزے لوٹ رہے ہیں ۔ دوسری جانب وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے ملزموں پر قومی سلامتی ایکٹ (راسوکا) لگاکر سخت کاروائی کرنے کا حکم دیا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close