یوپی

علی گڑھ میں دلت لڑکی کا گلا دبا کر قتل ،عصمت دری کا کوئی واضح ثبوت نہیں ملا

علی گڑھ (یوپی) ،02؍مارچ(آئی این ایس انڈیا) علی گڑھ پولیس کے ایک سینئر عہدیدار نے بتایا ہے کہ اتوار کے روز یہاں دلت لڑکی کی لاش ملی ہے اس کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں عصمت دری کا کوئی واضح ثبوت نہیں ہے۔ عہدیدار نے بتایا کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں پتہ چلا کہ بچی کا گلا گھونٹ دیا گیا ہے۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ علی گڑھ کے علاقے اکبر آباد میں کھیت میں چارہ لینے گئی لڑکی کی لاش نیم برہنہ حالت میں ملی تھی۔ نابالغ لڑکی کے اہل خانہ نے عصمت دری کے بعد اسے قتل کرنے کا الزام لگایا ہے۔ اس واقعات سے ناراض لوگوں نے آگرہ شاہراہ کو بند کردیا تھا۔ گاؤں والوں نے لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے لے جانے کی کوشش کر رہی پولیس ٹیم پر حملہ کیا تھا ، جس میں پولیس انسپکٹر پرینندر کمار زخمی ہوگئے تھے ۔ علی گڑھ کے سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) منیراج جی نے پیر کی شب بتایا کہ ایک دلت نوجوان کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں عصمت دری کا کوئی واضح ثبوت نہیں ملا ہے۔ ایس ایس پی نے بتایا کہ پولیس نے عصمت دری کی تصدیق کے لئے مائکرو بائیوولوجیکل معائنہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوسٹ مارٹم کے عمل کی ویڈیو گرافی کی گئی ہے۔متاثرہ لڑکی کے جسم پر چوٹ کے کئی نشانات تھے اور اس کی موت گلا دبا نے ہوئی تھی پولیس نے اس معاملے میں پوچھ گچھ کے لئے پانچ افراد کو گرفتار کیا ہے۔ جانچ سے اب تک کچھ واضح نہیں ہوسکا ہے۔ اس معاملے میں پولیس نے تعزیرات ہند کی دفعہ 302 (قتل) اور 376 (عصمت دری) کے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے۔ ایس ایس پی نے کہا کہ متاثرہ افراد کے اہل خانہ کو مناسب مالی امداد فراہم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close