یوپی

سبکدوشی منظورلیکن بی جے پی قبول نہیں،مایاوتی نے وضاحت پیش کی

لکھنؤ2نومبر(آئی این ایس انڈیا) بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی سربراہ مایاوتی جنہوں نے کچھ دن پہلے سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے امیدواروں کوشکست دینے کے لیے بی جے پی کے حق میں ووٹ ڈالنے سے پرہیزنہیں کرنے کی بات کی ہے ،نے اب ایک نیابیان دیاہے۔بہارمیںاویسی اتحاداوریوپی ضمنی الیکشن میں پارٹی کوکافی نقصان ہورہاتھا،اس لیے یہ وضاحت پیش کی گئی ہے۔ بی ایس پی سربراہ نے کہا ہے کہ وہ بی جے پی کے ساتھ کوئی اتحاد کرنے کی بجائے سیاست سے سبکدوش ہونے کوترجیح دیں گی۔ بی ایس پی سپریمو نے پیر کو میڈیا بریفنگ میں کہاہے کہ کسی بھی الیکشن میں بی جے پی کے ساتھ بی ایس پی کا کوئی اتحاد مستقبل میں ممکن نہیں ہے۔ بی ایس پی فرقہ پرست پارٹی کے ساتھ الیکشن نہیں لڑ سکتی۔ انہوں نے کہاہے کہ ہمارا نظریہ سارے مذاہب کااحترام ہے اور یہ بی جے پی کے نظریہ کے منافی ہے۔ بی ایس پی ان لوگوں کے ساتھ اتحاد نہیں کر سکتی جوفرقہ وارانہ ، ذات پات اور سرمایہ دارانہ نظریہ کے حامل ہیں۔ اہم بات یہ ہے کہ مایاوتی نے گذشتہ ہفتے کہاتھاکہ ان کی پارٹی قانون سازی کونسل اور راجیہ سبھا سمیت آئندہ انتخابات میں سماج وادی پارٹی کے امیدواروں کی شکست کویقینی بنانے کے لیے بی جے پی یا کسی اور پارٹی امیدوار کو ووٹ دینے سے گریزنہیں کرے گی۔ یوپی کی سات اسمبلی نشستوں پرمنگل کوووٹنگ سے ایک روزقبل بی ایس پی صدر اور سابق وزیراعلیٰ مایاوتی نے بی جے پی کے ساتھ سازبازکے الزامات پروضاحت پیش کی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close