ہندوستان

یوپی حکومت کے روزگارکے دعوے کھوکھلے،منریگا غیرمفید،نظم ونسق بدتر : کوروناکے محاذپر بی جے پی سرکارفیل،سنجے سنگھ نے خواتین کے عدم تحفظ پر سوال پوچھے

لکھنؤ29جون(آئی این ایس انڈیا) عام آدمی پارٹی کے یوپی انچارج اور راجیہ سبھا کے ممبر پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی پالیسیوں پرسوال اٹھائے ہیں۔ سنجے سنگھ نے کہاہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے ایک بار ملک کی پارلیمنٹ میں منریگا کا مذاق اڑایا تھا ، اب وہ لوگوں کو روزگار دے رہے ہیں۔ اترپردیش میں جرائم عروج پر ہے۔ کورونا کی جانچ کم ہو رہی ہے۔ سرحد پر جاری تنازعہ پرانھوں نے مرکزی حکومت کا گھیراؤکیا۔ انھوں نے کہاہے کہ بھارت ماںکی سرزمین کو آزاد کرانے کے لیے ، 20 فوجیوں نے قربانی دی اور بی جے پی کی بے شرم حکومت کہہ رہی ہے کہ چین نے ہندوستان کی سرزمین پر قبضہ نہیں کیا۔ تو پھر فوجی اورسفارتی سطح پر مذاکرات کیوں چل رہے تھے؟ وزیر داخلہ نے تو اکسائی چن لینے کے بارے میں بھی کہاتھا۔

سنجے سنگھ نے یوگی حکومت کے تقریباََایک کروڑ روزگار پر کہاہے کہ یوپی میں کوئی فیکٹری نہیں لگائی گئی ، نہ ہی کوئی یونٹ قائم کی گئی، نہ ہی نئی ملازمتیں پیدا کی گئیں۔ اس کے باوجودیوگی حکومت کہہ رہی ہے کہ ایک کروڑ نئی ملازمتیں دی جارہی ہیں۔ اساتذہ تقرری میں ایک بڑا گھوٹالہ انکشاف ہوا ، اساتذہ کو سر منڈوا کر احتجاج درج کرناپڑا۔ تمام بھرتیوں میں بے روزگاروں سے فارم پْر کرنے کے نام پر ، حکومت نے بے روزگاروں سے کروڑوں روپے کی وصولی کیے لیکن امتحان کے بعد بھی نتیجہ سامنے نہیں آیا اور کچھ نتائج سامنے نہیں آئے ۔امتحانات کے نام پریوگی حکومت نے بے روزگاروں سے رقم اکٹھا کرنے کا کام کیا ہے۔ بی ٹی سی کے طلباء ، سکشامتراور دیگربے روزگاروں نے حکومت کے خلاف آواز اٹھائی ، یوگی بابانے انھیں لاٹھیوں سے پیٹااورجیل میں ڈال دیا۔

سنجے سنگھ نے منریگا کے تحت 100 دن کی ضمانت کی ملازمت کی حقیقت بیان کی۔ اعداد و شمار کے مطابق ، 2019 میں قومی سطح پر اوسطاََ صرف 52 دن لوگوں کو ایم این آر ای جی اے کے تحت کام دیاگیاہے ، اتر پردیش میں صرف 42 دن میں لوگوں کوکام ملاہے۔ اس کے مطابق یوگی حکومت نے ایک سال میں ایک کنبے کو صرف 8442 روپے دیئے ہیں۔ یہ منریگاکی حقیقت ہے اور یوگی حکومت دھوکہ دے رہی ہے۔ روزگار دینے کے نام پر یوپی کے بے روزگار لوگوں کا مذاق اڑا رہی ہے۔راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ نے کہاہے کہ یوگی میں نظم ونسق برقرار رکھنے میں یوگی حکومت مکمل طور پر ناکام ثابت ہوئی ہے۔ انائومیں صحافی کا قتل ہوا۔ ہر روز چھوٹی لڑکیوں کے ساتھ زیادتی کی جارہی ہے۔

کانپور چائلڈ پروٹیکشن میں 57 معصوم لڑکیاں کوروناپوزیٹو بن گئیں ،7 لڑکیاں حاملہ ہوگئیں۔ بہرحال وہ کون ہے جس کی وجہ سے 7 لڑکیاں حاملہ ہوگئیں۔ ایسے غریب لوگوں کے خلاف کارروائی کرنے کی بجائے یوگی حکومت ان کے تحفظ کے لیے کوشاں ہے۔سنگھ نے کہاہے کہ 23 کروڑ آبادی والی ریاست میں صرف 19387 افرادکی جانچ کی گئی ہے۔ جبکہ دہلی میں 25 ملین آبادی والی ریاست میں 23 ہزار افراد کی کورونا جانچ کی جارہی ہے۔ اتنی بڑی آبادی والی ریاست میں ، یوپی میں تقریباََکوئی کوروناٹیسٹنگ نہیں کی جارہی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یوپی میں کورونا کے معاملات کم ہیں۔ اگر یوگی حکومت زیادہ سے زیادہ لوگوں کی جانچ کرتی تواترپردیش میں زیادہ سے زیادہ کورونا متاثرین کو نکالاجاتا۔یوگی سرکار نہ ٹیسٹ نوکوروناکا فارمولا اختیار کی ہوئی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close