ہندوستان

امرپالی پروجیکٹ کے لئے حکومت دے لون،جی ایس ٹی کرے معاف: سپریم کورٹ

نئی دہلی،22مئی(آئی این ایس انڈیا) سپریم کورٹ نے حکومت ہند کے وکیل کو سختی سے پیغام دیا کہ وہ حکومت سے کہیں کہ امرپالی پروجیکٹ کے لئے 500 کروڑ فوری طور پر لون کے طور پر فراہم کرے اور حکومت جی ایس ٹی کے طور پر بننے والے 1000 کروڑ ٹیکس چھوڑے کیونکہ اب اس پروجیکٹ میں کوئی پرائیویٹ پلیئر نہیں ہے بلکہ این بی سی سی بنا رہا ہے۔فلیٹ خریدنے والوں کی جانب سے پیش ایڈوکیٹ ایم ایل لاہوٹی نے کہا کہ غیرفروخت شدہ جائیداد کو بیچ کر 2220 کروڑ آ سکتا ہے۔سپریم کورٹ کے جسٹس ارون مشرا اور یویو للت کی بنچ نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے کیس کی سماعت کی۔خریداروں کے وکیل ایم ایل لاہوٹی نے بتایا کہ انہوں نے کورٹ کے سامنے ایک نوٹ پیش کیا جس میں بتایا گیا کہ امرپالی کے ادھورے پروجیکٹ کو مکمل کرنے کے لئے غیرفروخت شدہ پراپرٹی کو بیچ کر 2220 کروڑ آ سکتے ہیں ایسے 5228 یونٹ غیرفروخت شدہ ہیں،ساتھ ہی کہا کہ 398 بوگس الاٹمنٹ امرپالی نے کر رکھے ہیں اس سے بھی پیسے آئیں گے۔ساتھ ہی 5856 فلیٹ کو امرپالی نے کم قیمت میں فروخت کئے ہیں اس سے 345 کروڑ کی واپسی ہو سکتی ہے۔امرپالی کے تمام پراپرٹی کی نیلامی جوکہ سپریم کورٹ کے حکم سے ہوئے ہیں اس سے 7881 کروڑ آ سکتے ہیں۔امرپالی کے ڈائریکٹرس کی جائیداد سے 799 کروڑ روپے آ سکیں گے۔لاہوٹی نے بتایا کہ سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے حکومت ہند کے سالیسٹر جنرل کو سختی سے پیغام دیا کہ وہ حکومت سے کہیں کہ فوری طور پر امرپالی پروجیکٹ کے لئے 500 کروڑ لون فراہم کرے اور جی ایس ٹی کے طور پر 1000 کروڑ کی چھوٹ دے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close