ہندوستان

تم جوچاہوہواؤں کارُخ موڑدو : مفتی ثنا ٕالھدیٰ قاسمی

جہاں آباد ارول(11فروری)ہندوستان کےباشندوں کی قدیم ہےکہ انہوں نےظلم کےخلاف کبھی ہتھیارنہیں ڈالاہے,ظلم کسی خاص فردکی طرف سے ہویاکسی ذات کی طرف سے یاحکومت کی طرف سےیہاں کےلوگوں نےاس ظلم کےخلاف آواز بلندکرنااپنی ذمہ داری سمجھی اورضرورت پڑی تووہ مقابلے کے لئے مردان وارمیدان میں آئے،اس ملک میں ایس سی ایس ٹی ,اوبی سی اوردلیتوں کی حمایت سے چلائی جانے والی تحریکیں اس کی واضح مثال ہیں,ان طبقوں پرجب ایک خاص ذات کی طرف سےظلم کی حد ہوگئی تو مختلف تحریکات کےنتیجےمیں ان کےاس ظلم کودورکیاگیااورجوباقی رہ گیاہے اس کودورکرنے کے لئے دلت اورمسلمان مشترکہ طورپرکوشش کررہےہیں ان خیالات کااظہار امارت شرعیہ بہاراڈیسہ جھارکھنڈ کے نائب ناظم وفاق المدارس اسلامیہ کے ناظم اعلیٰ وہفت روزہ نقیب کےمدیرمحترم نے ڈھری اون سون، ارول ،جہان آباد اورگیاکہ CAA NRC NPR کےخلاف منعقداجلاس عام میں کہی وہ ان جگہوں پراس اجلاس کے مہمان خصوصی اور امارت شرعیہ کے قاعد وفدکی حیثیت سے خطاب فرما رہےتھےانہوں نے کہاکہ CAA NRC اور NPR کامنصوبہ ہندستان کے تمام شہریوں پر بڑاظلم ہے اس ظلم کے خلاف ہندوستان کے باشندے مرد و خواتین اور بچے میدان میں آگئے ہیں اور ہرقسم کی پریشانی اور مصیبت جھیل کر کے شہریت سے بےدخل کرنے کہ اس منصوبے کو ناکام بنانے کا عزم کر رکھاہےحکومت ان کے اس عزم سے پریشان ہےاس لئے کہیں دھرنے پر گولیاں چلوا رہی ہے اورکہیں پر امن مظاہرہ کرنے والوں کو قیدوبندمیں ڈالا جارہاہےحکومت کویہ بات سمجھ لینی چاہیے کہ جمہوریت میں حکومت آمریت اور ڈکٹیٹرشپ کے ذریعہ نہیں چلا کرتی بلکہ عوام کی طاقت سے چلا کرتی ہےاسی لئے جمہوریت کی سب سے مشہور تعریف یہی ہے کہ اس طرز حکومت میں عوام کی حکومت عوام کیے لئے اور عوام کے ذریعہ ہوتی ہے CAA NRC اور NPR عوام کے مفاد میں نہیں ہے،اس ملک کے وفاقی ڈھانچے کوکمزورکرنےوالاہے اس لئے حکومت کوایسے قانون ومنصوبے سے دست برداری کا اعلان کرنا چاہیے انہوں نے کہا کہ حکمرانوں نے عوام کی آواز نہیں سنی ان کا جوعبرت ناک انجام ہوا اس سے ہرکس و ناکس واقف ہے مفتی صاحب نے کیرالہ پنجاب راجستھان اور مغربی بنگال کے ذریعہ اس قانون کے مخالفت کی تجویز کوقابل تعریف قرار دیا انہوں نے کہاکہ ہم جانتے ہیں کہ شہریت کا قانون مرکز سے متعلق ہے اور ریاستوں کا اس میں کوئی عمل دخل نہیں ہے، اس کے باوجود اگر ملک کی بیشتر ریاستوں کی اسمبلیاں اس قسم کی تجویزیں پاس کرتیں ہیں تواس کابڑا اثر مرکزی حکومت پر دباؤ کی شکل میں سامنے آئے گا انہوں نے یہ کہاکہ لیڈیز فرسٹ ہم سنتے آئے تھے لیکن ہماری ماں بہنوں نے اس تحریک میں آگے آ کر ثابت کردیاہے کہ لیڈیز کا مقام اس تحریک میں اول نمبرپر ہے انہوں نے خواتین کواس تحریک کامضبوط حصہ بنے کیے لئے مبارکباد دی انہوں اس امیدکا اظہارکیا کہ جب تک یہ کالاقانون واپس نہیں ہوگا یہ تحریک ہرحال میں جاری رہےگا۔اس موقع پروفدمیں شامل مولانامحمدنصیرالدین مظاہری نےکہاکہ اس وفد کامقصدحضرت امیرشریعت دامت برکاتہم کاپیغام CAA NRC NPRکےسلسلے میں جوہے اس سے باشندگان بھارت کوواقف کرایاجائے مزیدکہاکہ آنے والے 15/فروری کوبہارکی 34/سیاسی و غیرسیاسی جماعتوں کی جانب سے متفقہ طورپرضلعی وبلاک کےہیڈکواٹرپردھرنے کانظام ترتیب دیاگیاہے لہذاحضرت امیرشریعت دامت برکاتہم کی ہدایت کےمطابق آپ سب مقامی سطح پر اس دھرناکوکامیاب بنائیں اورارادہ کریں کہ ہم CAA NRC NPRکےخلاف تحریک کومضبوطی کےساتھ جاری رکھیں گےواضح ہوکہ امارت شرعیہ پٹنہ کاایک مؤقر وفدحضرت مفتی محمد ثناءالہدیٰ قاسمی نائب ناظم کی قیادت میں جنوبی کےدورےپرہے اس وفدمیں امارت شرعیہ پٹنہ سے مولانانصیرالدین مظاہری، مدرسہ عظمتیہ بھداسی کےمولانامطیع الرحمن قاسمی، قاضی محمداصغرقاسمی دارالقضا امارت شرعیہ جہان آبادشامل ہیں۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close