ہندوستان

تشدد اور گوڈسے کے نظریات کے حامی ہماری آواز نہیں دبا پائیں گے: کانگریس

نئی دہلی۔۷؍جنوری: کانگریس نے احمد آباد میں اے بی وی پی اور این ایس یو آئی کے کارکنوں کے درمیان پرتشدد جھڑپیں ہونے کو لے کر بی جے پی پر شدید حملہ بولا اور دعوی کیا کہ تشدد اور گوڈسے کے نظریات کے حامی مخالفت کی آواز نہیں دبا سکتے۔کانگریس کے گجرات انچارج راجیو ساتو نے ٹویٹ کر کہاکہ بی جے پی کے ریاست میں اے بی وی پی کی کھلے عام غندہ گردی اور شرپسندی دوبارہ اجاگر ہو گئی ہے اور پرامن طور پر مخالفت کر رہے این ایس یو آئی کے کارکنوں کو بے رحمی سے مارا پیٹا گیا اور پولیس صرف خاموش تماشائی بنی ہوئی تھی۔تشدد اور گوڈسے کے نظریات کے حامی بی جے پی والے ہماری آواز نہیں دبا پائیں گے۔انہوں نے دعوی کیاکہ یہ ہے بی جے پی کے اقتدار کا اصلی چہرہ جو جس مخالفین کو تشدد اور طاقت کا استعمال کرکے ڈرانے کی ذہنیت کا استعمال ہے۔این ایس یو آئی کے کارکن کو بربریت سے زخمی کر دیا گیا اور انتظامیہ نے اس کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی، اس جابرانہ نظریے کے خلاف ہم لڑتے رہیں گے۔ این ایس یو آئی کے قومی صدر نیرج کندن نے کہاکہ پہلے جامعہ میں تشدد بھڑکایا، پھر جے این یو میں حملہ ہوا،اس کے خلاف مظاہرہ کرنے پر اے بی وی پی کے غنڈوں نے کل راجستھان یونیورسٹی میں این ایس یو آئی کے کارکنوں سے مارپیٹ کی۔آج گجرات میں این ایس یو آئی کے کارکنوں پر پولیس اور میڈیا کے سامنے جان لیوا حملہ کیا۔آپ سمجھ سکتے ہیں کہ ملک میں کیا صورت حال ہے؟۔ انہوں نے کہاکہ امت شاہ اور بی جے پی کے لوگ سوچتے ہیں کہ ہم تشدد سے ڈر جائیں گے تو وہ مغالطہ میں ہیں،ہم ڈرنے والے نہیں ہیں،ہم نوجوانوں اور طالب علموں کی آواز اٹھاتے رہیں گے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close