ہندوستان

بی جے پی کے وزیر اعلیٰ جے رام ٹھاکر کے لئے خطرے کی گھنٹی : بلدیاتی انتخابات میں صرف دو سیٹیں بی جے پی کے کھاتے میں

شملہ،08؍ اپریل (ہندوستان اردو ٹائمز) اتراکھنڈ کے بعد اب ایک اور پہاڑی ریاست ہماچل پردیش میں بی جے پی کے وزیر اعلی جے رام ٹھاکر کے لئے خطرے کی گھنٹی بج گئی ہے۔ ریاست میں ڈیڑھ سال کے بعد ہونے والے اسمبلی انتخابات سے قبل بی جے پی بلدیاتی انتخابات میں صرف دو سیٹیں حاصل کرنے میں کامیاب رہی۔حکمراں بی جے پی منڈی اور دھرم شالا میں واحد سب سے بڑی جماعت بن کر ابھری ، جبکہ کانگریس کو پالم پور اور سولن میں اکثریت حاصل ہوئی۔ کانگریس نے سولن اور پالم پور کارپوریشن انتخابات میں بڑے فرق سے کامیابی حاصل کی ہے ، جبکہ منڈی اور دھرم شالا میں بی جے پی نے کامیابی حاصل کی ہے۔

بی جے پی کی کارکردگی کے بعد اب سی ایم جے رام ٹھاکر پر سوالات اٹھ رہے ہیں۔ہماچل میں پانچ میونسپل کارپوریشن ہیں ، جن میں چار میں کل ووٹ ڈالے گئے تھے۔ جبکہ شملہ میونسپل کارپوریشن کا انتخاب مئی میں ہوگا۔ خاص بات یہ بھی ہے کہ پالم پور بی جے پی کے سابق وزیر اعلی اور سابق مرکزی وزیر شانتا کمار کا گڑھ ہے ، اس کے باوجود بی جے پی پالم پور کارپوریشن کاانتخابات بری طرح ہار گئی۔ جبکہ سولن ہماچل کے سابق بی جے پی صدر راجیو بندل کا گھر ہے ، لیکن وہاں بھی بی جے پی کی شکست ہوئی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close