ہندوستان

ریٹائرڈ ایس ڈی او نے کی خودکشی ، سوسائڈنوٹ میں بیان کی وجہ

گوالیار، ۲؍مارچ ( آئی این ایس انڈیا )
دوسال قبل زرعی محکمہ سے ریٹائرڈ ایس ڈی او راجندر سنگھ راجپوت نے اپنی ہی بندوق سے گولی مار کرخودکشی کرلی ۔ وہ رتی رام گارڈن کے قریب ونئے نگر سیکٹر 4 میں رہتا تھا۔ منگل کی صبح پولیس کو واقعے کی اطلاع ملنے پر موقع پرپہنچی ، جہاں ایک سوسائد نوٹ ملا۔ ریٹائرڈ ایس ڈی او نے سوسائڈ نوٹ میں اپنے درد کا اظہار کیا ہے۔اس نے لکھا ہے کہ گھر کے لئے بہو نے مجھے چور کہا ، اس کے والد اور بھائیوں نے مجھے پیٹا اور جھوٹے مقدمات درج کروائے،میراسماجی قتل کیا گیا ، میں اب زندہ نہیں رہنا چاہتا۔ پولیس نے لاش کو تحویل میں لے کر تفتیش شروع کردی ہے۔تفصیلات کے مطابق 9 ستمبر 2018 کو وہ بلاسپور چھتیس گڑھ سے ریٹائر ہواتھا، پسماندگان میں بیوی اور دو بیٹے ہیں۔ بڑا بیٹا پروفیسر ہے اور فی الحال وہ شیوپوری میں تعینات ہے۔ چھوٹا بیٹا شہر میں ہی سرکاری محکمہ میں تعینات ہے۔ پریتی سنگھ بہو شیو پوری کی ہے ، سسر اور بہو میں ہمیشہ ان بن رہتی تھی۔وہ منگل کی صبح اٹھا، بیوی کے ہاتھ کی چائے پی، اس کے بعد بیوی دوسرے کاموں میں مشغول ہوگئی۔ متوفی نے الماری سے اپنی بندوق نکالی اورتھوڑی پر رکھ کر ٹریگر دبادیا، گولی اس کے جبڑے اڑگئے ۔ گولی کی آواز سن کر اہلیہ اور لوگ وہاں پہنچ گئے ، لیکن تب تک وہ دم توڑ چکاتھا۔ سوسائڈ نوٹ میں سابق زر عی افسر نے لکھا کہ 30 ستمبر 2018 کو ریٹائر ہونے کے بعد بھی بہو نے ایک دن بھی اس کی ’’سیوا‘‘ نہیں کی ، وہ ہمیشہ میری توہین ہی کرتی تھی، مجھ پر چوری کا الزام لگایا۔3 جولائی 2020 کو بہو پریتی اور اس کے والد پریمل سنگھ ، بھائیوں پرمود عرف چنٹو اور منیش سنگھ نے مجھے پیٹا ۔بہو نے شیوپوری اور گوالیار میں جھوٹے مقدمات درج کئے، جس سے میرا معاشرتی قتل ہوا ہے، میں ان لوگوں کی وجہ سے زندہ نہیں رہنا چاہتا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close