ہندوستان

کریم رضا مونگیری کا انتقال بنگال کی اردو صحافت کیلئے ایک بڑا خسارہ : بنگال ورکنگ جرنلسٹ ایسوسی ایشن

کلکتہ (ہندوستان اردو ٹائمز)  مغربی بنگال کے بزرگ صحافی کریم رضا مونگیری کے انتقال کو اردو صحافت کا عظیم خسارہ قرار دیتے ہوئے بنگال ورکنگ جرنلسٹ ایسوسی ایشن نے اپنے تعزیتی پیغام میں کہا ہے کہ کریم رضا مونگیری کے انتقال سے اردوصحافت اپنے ایک عظیم سپوت سے محروم ہوگئی ہے، وہ صحافت کے ایک اہم ستون تھے۔گزشتہ پچاس سالوں سے اردو صحافت کی آبیاری کرر ہے تھے۔

خیال رہے کہ آج صبح کریم رضا مونگیری کا اپنی رہائش گاہ پر انتقال ہوگیا ہے وہ کچھ عرصے سے بیمارتھے۔
بنگا ل ورکنگ جرنلسٹ ایسوسی ایشن کے صدر و معروف صحافی محمد فاروق نے 75سالہ بزرگ صحافی کریم رضامونگیری کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ کریم رضا مونگیری روزنامہ عکاس کی 50سالوں سے کامیابی کے ساتھ ادارت سنبھالے ہوئے تھے اور انہوں نے اس اخبار کومعاشی اعتبار سے مستحکم کرنے کے ساتھ اپنی زندگی میں ہی اس وراثت کو نئی نسل اپنے داماد و بھتیجے کو منتقل کرنے میں کامیاب ہوگئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ کریم رضا مونگیری کسی گروپ اور ازم پر یقین نہیں رکھتے تھے اسی وجہ سے وہ ہرایک حلقے میں یکساں مقبول تھے اور بنگال کی اردو دنیا کے تمام پروگراموں میں انہیں مدعوکیا جاتا تھا اور فراخدلی سے دعوت قبول اور شرکت کرتے تھے۔گزشتہ چند سالوں سے وہ ہر بزم کی رونق تھے۔انہوں نے کہا کہ کریم رضا مونگیری کی سب سے بڑی خوبی یہ تھی کہ وہ اخبار کے مالک ہونے کے باوجود پریس کانفرنسوں میں تواتر کے ساتھ شریک ہوتے تھے۔جب کہ مالکا ن عام طورپر بڑے لیڈروں کے پریس کانفرنس کے علاوہ کہیں نہیں جاتے ہیں مگر اس معاملے میں کریم رضا مونگیری کو استثنیٰ حاصل تھا۔وہ چھوٹے اور بڑے تمام پریس کانفرنسوں اور اردو کے پروگراموں میں شریک ہوتے تھے۔

ورکنگ جرنلسٹ ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری و سہ ماہی مژگاں ماہنامہ نیا کھلونا اور نئی صدی نیوز کے ایڈیٹر ڈاکٹر نوشاد مومن نے کہا کہ کریم رضامونگیری صلح کل پر یقین رکھنے والے صحافی تھے،ٹکراؤ و مقابلہ آرائی سے گریز کرتے ہوئے خبرکو خبر کی طرح پیش کرنے میں ان کا یقین تھا۔انتہائی متواضع اور بااخلاق انسان تھے اور اپنے چھوٹوں کے ساتھ شفقت کے ساتھ پیش آنے والے انسان تھے،چناں چہ ان کے ادارے سے وابستہ کئی صحافیوں نے ان کی سرپرستی ورہنمائی میں صحافت کے پیج وخم سیکھنے کے بعد اردودنیا اور صحافت میں اپنانام اور مقام حاصل کیا ہے۔روزنامہ عکاس سے وابستہ رہنے والے صحافیوں میں مرحوم سجاد نظراور یواین آئی اردو سروس کے ایڈیٹر و شاعر عبد السلام عاصم شامل ہیں۔کریم رضا مونگیری کی کمی ایک مدت تک محسوس کی جائے گی
ڈاکٹر نوشاد مومن نے کہا کہ ایسوسی ایشن کی جانب سے جلد ہی ایک تعزیتی نشست کا اہتمام کیا جائے گا۔جس میں کئی لوگ ورچوئلی شریک ہوں گے۔ تاریخ اور وقت کا اعلان فیس بک واخبارات کے ذریعہ کردیا جائے گا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close