کھیل

ہندوستان۔ انگلینڈ تیسرا ٹیسٹ آج ، کوہلی کی نظر بڑے اسکور اورہندوستان کو ناقابل تسخیر برتری دلانے پر

لیڈس،24؍اگست  (ہندوستان اردو ٹائمز) انگلینڈ کے خلاف بدھ سے شروع ہونے والے تیسرے ٹیسٹ میں میچوں کی سیریز میں کپتان وراٹ کوہلی کی نظر بڑے اسکور بنانے اور ہندوستان کو ناقابل تسخیر برتری دلانے پر ہوگی۔ کوہلی نے اپنی آخری بین الاقوامی سنچری نومبر 2019 میں بنائی تھی۔ انہوں نے موجودہ سیریز میں دو مواقع پر 40 کا ہندسہ عبور کیا لیکن بڑا اسکور کرنے میں ناکام رہے۔ تاہم ان سے ہمیشہ بڑے اسکور کی توقع کی جاتی ہے۔چیتیشور پجارا اور اجنکیا رہانے کی فارم بھی ہندوستان کے لیے تشویش کا باعث ہے۔ تاہم ان دونوں نے لارڈز ٹیسٹ کے چوتھے دن تقریبا 50 اوور تک بیٹنگ کے بعد فارم میں واپسی کے آثار دکھائے ہیں۔ وہ میچ کو پانچویں دن تک لے گئے جس کے بعد تیز گیند بازوں نے ہندوستان کو فتح دلائی اور سیریزمیں 1-0 سے آگے ہے۔ بلے بازی کے شعبے میں اوپنرز روہت شرما اور کے ایل راہل کی پرفارمنس ہندوستان کے لیے مثبت پہلو ہے۔ ان دونوں نے مشکل حالات میں اپنی تحمل اور تکنیک کی ایک اچھی مثال پیش کرتے ہوئے ہندوستان کو اچھی شروعات دی۔راہل کوزخمی مینک اگروال کی جگہ ٹیم میں شامل کیاگیا،وہ دو ٹیسٹ میں زیادہ پراعتماد نظر آئے اور انہیں معلوم گیا ہے کہ کون سی گیندکھیلنی ہے اور کون سی چھوڑنی ہے۔روہت بھی بہت اچھی فارم میں ہیں اور انہیں اس بات کا یقینی بنانا ہوگا کہ اپنا پسندیدہ پل شاٹ کب کھیلیں کیونکہ وہ سیریز میں دو بار اسی طرح آؤٹ ہوئے ہیں۔

 

رشبھ پنت اپنے فطری انداز میں بیٹنگ کر رہے ہیں جبکہ ساتویں نمبر پر رویندرا جڈیجہ نے بھی بہت اچھا کردار ادا کیا ہے۔ یہ کہا جا سکتا ہے کہ وہ ٹیم میں بائیں ہاتھ کے اسپنر سے زیادہ بطوربلے باز کھیل رہے ہیں۔ہیڈنگلے کے حالات فاسٹ بولرز کے لیے سازگار ہونے کا امکان ہے اور ہندوستان چار فاسٹ بولرز کے ساتھ کھیل سکتا ہے۔ ایسی صورت حال میں روی چندرن اشون کی دوبارہ پلیئنگ الیون میں جگہ نہیں ہوگی۔ شاردول ٹھاکر فٹ ہیں لیکن ایسا نہیں لگتا کہ کوہلی اپنے پیس اٹیک میں کوئی تبدیلی کریںگے۔ایشانت شرما جو پہلے ٹیسٹ سے محروم رہے انہوں نے لارڈز میں متاثر کن بولنگ کی ۔محمد سراج کی آمد سے ہندوستان کا تیزگیندبازی حملہ مضبوط ہوا ہے۔ سراج نے پانچویں دن لارڈز میں شاندار بولنگ کی۔ انہوں نے اپنی بہترین گیند بازی سے مسلسل متاثر کیا ہے۔

 

ہندوستان نے آخری بار یہاں 2002 میں کھیلا تھا جب وہ ایک اننگز اور 46 رنز سے جیتا تھا۔ موجودہ ٹیم کے کسی بھی کھلاڑی کو اس گراؤنڈ پر کھیلنے کا تجربہ نہیں ہے۔ یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ وہ صورتحال کو کتنی جلدی ایڈجسٹ کرتے ہیں۔انگلینڈ کو امید ہے کہ ڈیوڈ ملان کی آمد سے ان کی بیٹنگ کی کمزوری دور ہو تی ہے یا نہیں۔ ملان نے اپنا آخری ٹیسٹ تین سال قبل کھیلا تھا لیکن انہیں فرسٹ کلاس کرکٹ کا اچھا تجربہ ہے۔بائیں ہاتھ کے بلے باز تیسرے نمبر پر کھیلیں گے اور ایسی صورتحال میں حسیب حمید کو روری برنس کے ساتھ اننگز کا آغاز کرنا پڑ سکتا ہے۔ انگلینڈ کے بلے بازوں کو رنز بنانے کر کپتان جو روٹ کا ساتھ دینا ہوگا۔ اب تک روٹ نے انگلینڈ کی جانب سے سب سے زیادہ رنز بنائے ہیں۔مارک ووڈ جنہوں نے اپنے اضافی باؤنس سے ہندوستانی بلے بازوں کو پریشان کیا ہے وہ زخمی ہیں اور ایسی صورتحال میں، صادق محمود کو ٹیسٹ ڈیبو کرنے کا موقع مل سکتا ہے۔روٹ نے میچ سے قبل تصدیق کی کہ ووڈ کے علاوہ کوئی فٹنس مسئلہ نہیں ہے اور جیمس اینڈرسن اچھی حالت میں ہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close