کھیل

دنیا بھر کے کھلاڑیوں کے لئے غیر ارادی لیکن اچھا بریک : ظہیر عباس

نئی دہلی،09 ؍اپریل ( آئی این ایس انڈیا ) پاکستان کے عظیم بلے باز ظہیر عباس کا خیال ہے کہ کرونا وائرس وبا کی وجہ سے کھیل رک جانے سے زندگی اچاٹ ہو گئی ہے لیکن یہ دنیا بھر کے کھلاڑیوں کے لئے اچھا بریک ہے جو مصروف شیڈول کی وجہ سے اکثر پریشان رہتے ہیں۔کرونا وائرس وبا کی وجہ سے دنیا بھر میں 14 لاکھ سے زیادہ لوگ متاثر ہیں اور 79000 سے زیادہ جانیں جا چکی ہیں۔ کھیلوں کی تقریب یا تو ملتوی ہو گئی ہیں یا منسوخ کرد ی گئی ہیں۔انہوں نے کہاکہ کھیل کے بغیر زندگی بورنگ ہے لیکن صحت بہت ضروری ہے۔ یہ بے مثال حالات ہے۔ میں نے اپنی زندگی میں کبھی نہیں دیکھا کہ دنیا بھر میں زندگیاں یک دم تھم گئی ہوں۔ اس کا اثر ہر ملک پر اور ہر چیز پر پڑے گا، کھیل بھی اس سے الگ نہیں ہے۔ اقتصادی نقصانات کا اندازہ بھی نہیں لگایا جا سکتا۔کوئی کھلاڑی ایسا بریک نہیں چاہتا لیکن ایک طرح سے کرکٹروں کے لیے یہ اچھا بھی ہے جو تقریبا سال بھر خاندان سے دور کھیلتے ہی رہتے ہیں۔اپنی بلے بازی کے لیے ایشیائی بریڈمین کہے جانے والے عباس نے کہاکہ یہ اچھا بریک ہے۔ کھلاڑی سال بھر اتنا کھیلنے ہیں کہ انہیں خاندان کے ساتھ وقت گزرانے کا موقع ہی نہیں ملتا۔ میں انہیں مشورہ دوں گا کہ خود تجزیہ، فٹنس پر کام کرے ر ہیں اور وہ سب کریں جو انہیں اپنے مصروف شیڈول کی وجہ سے کرنے کا موقع نہیں ملتا۔انہیں خود لندن جانا تھا جہاں اس کی بیوی اور گھر ہے لیکن لاک ڈائون کی وجہ سے کراچی میں ہی رہ گئے۔انہوں نے کہاکہ مجھے لندن جانا تھا کیونکہ میری بیوی وہیں ہے اور وہاں حالات بہت خراب ہیں۔ اس وقت پاکستان ٹیم کو انگلینڈ دورہ کرنا تھا اور میں وہاں میچ دیکھنے کا انتظار کر رہا تھا۔ ہمارا گھر بھی لارڈس کے پاس ہے۔ لیکن کرونا وائرس کی وجہ سے سارے منصوبوں پر پانی پھر گیا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close