بنگلور

کرناٹک: محمد فاضل قتل معاملے میں پولیس کو اہم سراغ ملنے کا دعویٰ

بنگلور، یکم اگست (ہندوستان اردو ٹائمز) کرناٹک پولس نے پیر کو محمد فاضل منگل پیٹ قتل کیس میں چار قاتلوں کے گروہ کی شناخت کرکے کامیابی کا دعویٰ کیا ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق سوہاس، موہن، گری اور امیت نے فاضل کا قتل کیا تھا۔جانچ میں پتہ چلا ہے کہ سوہاس اس معاملے میں اہم ملزم ہے۔ اس کا مجرمانہ ریکارڈ ہے اور وہ ایک قتل اور دو اقدام قتل کے مقدمات میں ملوث ہے۔ اس کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔

پولیس نے قاتلوں کے ذریعہ 28 جولائی2022 کو جرم کرنے کے لئے استعمال کی گئی کار کو بھی ضبط کرلیا ہے اور اس کے مالک اجیت کرسٹا (40) کو گرفتار کرلیا ہے جو سورتھکل کا رہنے والا ہے۔فرانزک سائنس لیبارٹری (ایف ایس ایل) کے ماہرین ضبط شدہ گاڑی کی جانچ کر رہے ہیں اور توقع کی جا رہی ہے کہ وہ مزید سراغ اور ثبوت فراہم کریں گے۔منگلورو کے پولس کمشنر این ششی کمار نے کہا کہ ایجنسیوں نے اس کیس کے سلسلے میں 51 لوگوں سے پوچھ گچھ کی ہیاور قاتلوں کے بارے میں درست سراغ حاصل کیے ہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ انہیں جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔فاضل کو قتل کرنے کے بعد قاتلوں نے کار کو پڈوبیدری تھانے کے علاقے میں چھوڑ دیا۔ فاضل کے اہل خانہ کے مطالبے پر محکمہ پولیس نے اے سی پی رینک کے افسر کو تحقیقات کے لیے مقرر کیا ہے۔ریاست کی اپوزیشن جماعتوں نے فاضل کے قتل کی منصفانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا تھا۔ چیف منسٹر بسواراج بومئی نے کہا تھا کہ پولیس کو قاتلوں کی تفتیش اور گرفتار کرنے کی پوری آزادی دی گئی ہے۔شبہ ہے کہ فاضل کو ہندو کارکنوں نے بی جے پی یوا مورچہ کے رکن پروین کمار نیتارے کے قتل کا بدلہ لینے کے لیے قتل کیا تھا۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button