قومی

کانگریس ’بھارت جوڑو یاترا‘ کا خاکہ تیار کرنے میں مصروف، 14 جولائی کو میٹنگ

نئی دہلی ،12جولائی (ہندوستان اردو ٹائمز) کانگریس نے تنظیم کو مضبوط کرنے اور ’بھارت جوڑو یاترا‘ کا خاکہ تیار کرنے کی پالیسی طے کرنے کے لیے جمعرات یعنی 14 جولائی کو پارٹی کے سبھی جنرل سکریٹریز، ریاستی انچارج اور صدور کی میٹنگ بلائی ہے۔ کانگریس 2 اکتوبر سے کنیاکماری سے کشمیر تک ’بھارت جوڑو پد یاترا‘ شروع کرے گی۔

آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے جنرل سکریٹری اور تنظیم انچارج کے سی وینوگوپال کے ذریعہ سبھی عہدیداروں کو بھیجے گئے دعوت نامہ میں کہا گیا ہے کہ اے آئی سی سی جنرل سکریٹریز، ریاستی انچارج، ریاستی کانگریس صدور اور فرنٹل تنظیموں کے سربراہان کی میٹنگ جمعرات، 14 جولائی کو دوپہر 2.30 بجے ہوگی۔

کانگریس صدر سونیا گاندھی نے 15 مئی کو اعلان کیا تھا کہ پارٹی مہاتما گاندھی کی جینتی یعنی 2 اکتوبر سے کنیا کماری سے کشمیر تک ’بھارت جوڑو‘ پد یاترا نکالے گی۔ اس سلسلے میں پہلی میٹنگ 5 جون کو ہوئی تھی اور اس کے بعد سے میٹنگوں کا دور جاری ہے۔ پہلی میٹنگ کے فوراً بعد کانگریس کے سینئر لیڈر دگوجے سنگھ نے ٹوئٹ کیا تھا کہ بھارت جوڑو یاترا کے لیے سنٹرل پلاننگ گروپ کی آج پہلی میٹنگ ختم ہوئی۔ کنیا کماری سے کشمیر تک کی یہ یاترا 2 اکتوبر کو شروع ہوگی اور اس کا منصوبہ صحیح طریقے سے شروع ہو گیا ہے۔

میٹنگ میں راہل گاندھی بھی شامل ہوئیٓ کانگریس نے اس یاترا کے تعلق سے جانکاری دیتے ہوئے بتایا ہے کہ کنیاکماری سے شروع ہو کر کشمیر میں ختم ہونے والی یہ پدیاترا یعنی پیدل سفر کم از کم 12 ریاستوں کا احاطہ کرے گا۔ ان ریاستوں میں پارٹی یکساں نظریات والے گروپوں اور سیاسی پارٹیوں تک رسائی بنائے گی۔ ذرائع نے کہا کہ کانگریس ’بھارت جوڑو‘ یاترا میں یکساں نظریات والی سیاسی طاقتوں اور سماجی شعبوں میں کام کرنے والی غیر سرکاری تنظیموں کو ساتھ لے کر چلنے کی کوشش کرے گی۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button