پٹنہ

نتیش کمار کو بی جے پی نے دیا جھٹکا : آیوشمان بھارت کے لئے مرکزی حکومت سے بہار کو ایک پیسہ بھی نہیں ملے گا!

پٹنہ (ذرائع) آیوشمان بھارت کے لیے مرکزی حکومت سے بہار کو ایک پیسہ بھی نہیں ملے گا۔ اس کی وجہ رواں مالی سال میں منصوبہ بندی میں ریاست کے لیے مختص رقم خرچ نہیں ہوناہے۔اس صورت حال کا اندازہ کرنے کے بعد مرکزی حکومت نے نظر ثانی بجٹ میں منصوبہ بندی کے لیے مقرر رقم کم کرکے آدھی کر دی ہے۔مالی سال 2019-20 میں 6400 کروڑ روپے مختص کیے گئے تھے۔اس پر نظر ثانی بجٹ میں کم کرکے 3200 کروڑ روپے کر دیا گیاہے۔گزشتہ 10 مہینوں میں ریاستی حکومت صرف 1698.71 کروڑ روپے ہی خرچ کر پائی ہے۔ اگلے دو ماہ یعنی فروری اور مارچ میں 1500 کروڑ خرچ کرنے ہوں گے۔اتنی بڑی رقم ہونے کے باوجود قومی ہیلتھ اتھارٹی نے اس مالی سال میں بہار کو ایک بھی روپیہ اس منصوبہ کے تحت جاری نہیں کیا ہے۔سماجی و اقتصادی مردم شماری 2011 میں آنے والے ریاست کے 1.08 کروڑ خاندانوں کو آیوشمان بھارت کے تحت پانچ لاکھ روپے کا ہیلتھ انشورنس احاطہ دیاجاناہے۔ بہار میں منصوبہ بندی کے تحت کم گولڈن کارڈ جاری ہونے اور کم ہسپتالوں کے درج ہونے کی وجہ سے مزید فائدہ اٹھانے والوں کو اس کا فائدہ نہیں مل پا رہاہے۔کل 1.08 کروڑ مستفید ین میں سے 43 لاکھ خاندان کو ہی اب تک گولڈن کارڈ جاری کیاگیاہے۔اس منصوبہ کے تحت بہار کی صورت حال اب ٹھیک نہیں ہے۔پھر بھی ستمبر، 2018 میں لانچ ہوئے اس منصوبہ کے تحت 31 جنوری، 2020 تک 98.69 کروڑ خرچ کیے گئے ہیں۔ اس میں مرکزی حکومت سے اب تک 88.27 کروڑ روپے حاصل ہوئے ہیں اور ریاستی حکومت نے 50.56 کروڑ کا حصہ دیا ہے۔آیوشمان بھارت مرکز اور ریاستی حکومت کی شراکت والی منصوبہ بندی ہے۔ مرکزی رقم لینے کے لیے ریاستوں کو خرچ کا مکمل بیورا بھیجنا پڑتا ہے۔ محکمہ صحت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر کسی وجہ ریاستی حکومت مرکز کو اعداد و شمار نہیں بھیجتی ہے یا تفویض رقم 75 فیصد رقم خرچ کرنے میں ناکام رہتی ہے تو مرکز رقم روک دیتا ہے۔ وقت پر مرکز کو منصوبہ بندی کے تحت خرچ کا بیورا نہیں بھیجنے کی وجہ سے بہار کو رقم جاری نہیں کی گئی۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close