پٹنہ

بہار کے وزیر زراعت کامتنازعہ بیان، کسانوں کی تحریک کوچنددلالوں کااحتجاج کہا

پٹنہ20دسمبر(آئی این ایس انڈیا) بہارکے وزیرزراعت امریندر پرتاپ سنگھ نے دہلی میں جاری کسانوں کی تحریک کے بارے میں ایک متنازعہ بیان دیاہے۔اتوارکے روز ویشالی کے سونپور میں صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے سنگھ نے کسانوں کی تحریک کو دلال کی تحریک قراردیا۔ انہوں نے کہاہے کہ ملک میں ساڑھے 5 لاکھ گاؤں ہیں لیکن کسی گاؤں میں کہیں بھی کسانوں کی تحریک نہیں ہے۔دراصل دہلی بارڈر پر کسانوں کی تحریک 3 ہفتوں سے زیادہ عرصہ سے مرکزی زرعی قوانین کے خلاف جاری ہے۔ اس کے بارے میں بہار کی این ڈی اے حکومت میں وزیر زراعت امریندر پرتاپ سنگھ نے کہا ہے کہ دہلی اورہریانہ کی سرحدوں کے پار جاری تحریک کسانوں کی تحریک نہیں بلکہ دلالوں کی تحریک ہے۔وزیر امریندر نے مزیدکہاہے کہ کیاکسان صرف دہلی اور ہریانہ کی سرحدوں پر ہیں؟ اس ملک میں ساڑھے 5 لاکھ گاؤں ہیں۔ کسان کون سے گاؤں میںاحتجاج کررہے ہیں؟کیابہارمیں کسان احتجاج کررہے ہیں؟ 5.5 لاکھ دیہات میں کسانوں کاکوئی مطلب نہیں ہے اور وہ سب کہتے ہیں کہ زرعی قانون ان کے حق میں ہے۔ دہلی میں مٹھی بھر چند دلال کسانوں کی طرح احتجاج کر رہے ہیں اورمیڈیااس کانوٹس لے رہاہے۔اگر واقعتا ہندوستان میں کسانوں کی تحریک ہوتی آگ لگ جاتی ۔ادھر این ڈی اے کی ایسوسی ایٹ نیشنل ڈیموکریٹک پارٹی کے کنوینر ہنومان بینی وال نے بھی اعلان کیاہے کہ 26 دسمبر کو ان کی پارٹی کسانوں کی تحریک کی حمایت میں دو لاکھ کسانوں کے ساتھ راجستھان سے دہلی تک مارچ کرے گی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close