پٹنہ

شراب بندی سے غریبوں کااستحصال ،بے روزگاری کی وجہ سے دامادکوٹکٹ دیا:جیتن رام مانجھی

پٹنہ22اکتوبر(آئی این ایس انڈیا) بہار اسمبلی انتخابات میں ووٹنگ کے لیے ایک ہفتہ سے بھی کم وقت باقی ہے۔ ادھر سیاستدانوں کی تشہیرجاری ہے۔ سابق وزیراعلیٰ اور ہندوستانی اووم مورچہ کے سربراہ جیتن رام مانجھی ، جو انتخابات سے قبل این ڈی اے میں شامل ہوئے تھے ،انھوں نے دوایسے بیان دیے ہیں جن سے بی جے پی جدیوکے لیے مشکل ہوسکتی ہے۔بے روزگاری کاگویااعتراف کرتے ہوئے انھوں نے کہاہے کہ دامادبے روزگارتھے،اس لیے ٹکٹ دیا،یعنی جب نیتائوں کے رشتے داروں کایہ حال ہے توعام لوگ کس قدربے روزگاری کی مارجھیل رہے ہیں۔انھوں نے شراب بندی کی مخالفت کرتے ہوئے کہاہے کہ اس سے غریبوں کے ساتھ ناانصافی ہورہی ہے۔یہ بیان جدیوکے لیے خفت کاسبب ہوسکتاہے۔جیتن رام مانجھی نے کہاہے کہ تیجسو ی یادوصرف ملازمت کی بات کررہے ہیں ، جبکہ بی جے پی نوکریاں دینے کی بات کررہی ہے۔ دونوں میں فرق ہے۔ اس سے قبل ملازمتوں کے معاملے پر اپنی ایک ریلی میں انہوں نے کہا تھا کہ 10 لاکھ نوکریوں کا وعدہ کھوکھلا ہے ، اتنی ملازمت دیناممکن نہیں ہے ، لہذا اگر ان کی حکومت بنی ہے تو یہ لوگ صنعت کو اغوا کرلیں گے جیسے 2005 سے پہلے تھا۔این ڈی اے سے علیحدگی اختیار کرنے والے ایل جے پی کے چراغ پاسوان کے بارے میں انہوں نے کہاہے کہ ان کے پیروں تلے سے زمین پھسل گئی ہے۔ اسی لیے ہم نے فیصلہ کیا ہے۔ جتن رام مانجھی کے خلاف خاندانی ازم کے الزام پرانہوں نے جواب دیاہے کہ ان کی سمدھن اس سے قبل بھی ایم ایل اے رہ چکی ہیں ، دوسری طرف داماد بیروزگار ہے ، لہٰذاٹکٹ دیا گیا ہے۔اس الیکشن میں شراب پر پابندی کے بارے میں مستقل بحث جاری ہے ، جیتن رام مانجھی نے اس مسئلے پرکہاہے کہ وہ اس قانون میں ترمیم کی اپیل کریں گے۔ کیونکہ ایسے بہت سے واقعات ہوئے ہیں جہاں غریبوں کے ساتھ ناانصافی کی جاتی ہے ۔پولیس انہیں پکڑتی ہے اور امیر رہ جاتے ہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close