پٹنہ

اوپیندر کشواہا ہڑتال پربیٹھے، حکومت کورونا سے نمٹنے میں ناکام

پٹنہ27مئی(آئی این ایس انڈیا) رالوسپاکے صدر اوپیندر کشواہا بدھ کے روز پارٹی دفتر کے باہر کارکنوں کے ساتھ دھرنے پر بیٹھ گئے۔اوپیندر کشواہانے حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ کورونا سے نمٹنے میں ناکام رہی ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ جب لاک ڈاؤن تھا تو ہم گھروں میں بندتھے۔ لیکن ، اب یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ گھر میں بند رہنے سے کام نہیں ہوگا۔ لاک ڈاؤن مکمل طور پر ناکام ہوگیاہے۔ یہ بیماری حکومت کی غیرسنجیدگی کی وجہ سے تیزی سے پھیل رہا ہے۔

حکومت پربھروسہ کرکے کورونا کے ساتھ لڑناممکن نہیں ہے۔ہمیں اپنی حفاظت کرنی ہوگی ، تب ہی ہم کورونا سے چھٹکارامیں کامیاب ہوجائیں گے۔کشواہا نے کہا کہ آئسولیشن مراکزمیں لوگ جہنم جیسی زندگی گزارنے پر مجبورہیں۔ لوگ بھوک کا شکار ہو رہے ہیں۔ باہر سے آنے والے مزدوروں کوروزگار کیسے ملے گا؟ ہم ان تمام امور پر حکومت کی طرف توجہ دلانا چاہتے ہیں۔ ہم نے پہلے بھی مشورہ دیاتھالیکن حکومت نے اس پر عمل درآمد نہیں کیا۔

ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ آئسولیشن مراکزمیں صورتحال کو بہتر بنایا جائے۔ اگر حکومت اس طرف توجہ نہیں دیتی ہے تو پھر اس تحریک کو مزید تیز کیا جائے گا۔اس سے قبل منگل کے روز اوپیندر کشواہا نے وزیراعلیٰ نتیش کمار کو ایک خط لکھا تھا جس میں مزدوروں اورنوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کے لیے ایک قلیل مدتی پالیسی بنانے کا مشورہ دیا تھا۔

اوپپیندر کشواہا نے تجویزپیش کی تھی کہ تارکین وطن مزدوروں کو ان کے دیہات اور قصبوں میں روزگار فراہم کرنے کا ایک نظام ہوناچالیے۔ عمر ، تعلیم اور مہارت کی بنیاد پر ، ان مزدوروں کا ایک ڈیٹا بیس اور ورکر پروفائل تیار کیا جائے ، تاکہ انہیں فوری طور پر کام میں لایاجاسکے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

یہ بھی پڑھیں
Close
Back to top button
Close
Close