بہارپٹنہ

پروفیسر کرانتی کمار کے اعزاز میں سمستی پور کالج (متھلا یونیورسٹی) میں الوداعی تقریب کا انعقاد

سمستی پور (ہندوستان اردو ٹائمز) پروفیسر کرانتی کمار کے کے ملازمت سے ریٹائرمنٹ پر ایک خوبصورت تقریب کا انعقاد سمستی پور کالج کے ہال میں منعقد ہوا، جس میں کالج کے پرنسپل پروفیسر ستین کمار کے سمیت طلبہ وطالبات ساتھ ساتھ شہر کے معزز شخصیات نے شرکت کی، سبھوں نے کرانتی کمار کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے ان کی شخصیت وفن پر روشنی ڈالی،

کالج کے پرنسپل محترم ڈاکٹر ستین کمار نے اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر کرانتی کمار کی شخصیت محتاج تعارف نہیں ہے، وہ ایک کامیاب استاذ کے ساتھ ساتھ ایک ذمہ دار، وفا شعار، اور مخلص انسان بھی ہیں، جن کے دل میں طلبہ وطالبات کے تئیں محبت اور مخلصانہ جذبہ ہے،پروفیسر آلوک پاٹھک (شعبہء میتھلی) نے بھی ان کی شخصیت وفن پر روشنی ڈالی اور کہا کہ کرانتی کمار جیسی شخصیت صدیوں میں جنم لیتی ہے، وہ علم وادب کے سمندر ہیں، تہذیب وثقافت کے پیکر ہیں، صدر شعبہء اردو ڈ اکٹر صفوان صفی نے بھی اپنے تاثرات کا اظہار کیا، اور کہا کہ کرانتی کمار اسم بامسمی شخصیت کے مالک ہیں، جس طرح ان کا نام کرانتی ہے اسی طرح انہوں نے زندگی بھی بے باکی سے گزاری، ہمیشہ انہوں نے غلط کو غلط اور صحیح کو صحیح کہا، ایسی شخصیت اس معاشرے میں بہت کم نظر آتی ہے، یہ ہمیشہ ہمارے دلوں میں موجود ومحفوظ رہیں گے،واضح رہے کہ ڈاکٹر کرانتی کمار کا تعلق سمستی پور کالج علم اقتصادی (اکنومس) کے شعبہ سے رہا ہے، انہوں نے شعبہ اقتصادیات میں چالیس سال خدمات انجام دی ہیں، ان کی فن اور شخصیت پر روشنی ڈالتے ہوئے ڈاکٹر صالحہ صدیقی اسسٹنٹ پروفیسر شعبہ اردو نے اپنے منظوم تاثرات ان لفظوں میں کیا،،

الوداع الوداع علم وفن کی شان الوداع
الوداع الوداع سمستی پور کالج کی جان الوداع
قائم ہے جس سے سدا اک تہذیب وثقافت
الوداع الوداع عظمت کا وہ نشان الوداع
تھا سب کے لئے اک سایہء شفقت
الوداع الوداع وہ خوب صورت آسمان الوداع
جس نے بنائی اپنی الگ ہی اک شناخت
الوداع الوداع وہ شخص وہ مہمان الوداع
آتی ہے خوشبو جس کے ہر اک لفظ سے
الوداع الوداع پیارا سا وہ انسان الوداع
جس کی فکر اور سوچ میں تھی بلندیاں
الوداع الوداع خوش فکر وہ خوش گمان الوداع
آپ کی جدائی کا ہر اک پہ ہے اثر
الوداع الوداع سمستی پور کالج کی شان الوداع
جس کے دم سے رونقیں محفل میں تھیں
الوداع الوداع پیار کا وہ جہان الوداع
کہ رہی ہے صالحہ بھی اب یہی
الوداع الوداع نیک دل انسان الوداع

مزید چند اشعار بزبان ڈاکٹر صالحہ صدیقی صاحبہ

نکل کر اس چمن سے تم چمن کی آبرو رکھنا
سفر مشکل ہے لیکن تم سفر کی جستجو رکھنا
تمہارے ساتھ جو گزرے وہ لمحے یاد ہیں سب کو
بس اتنی سی گزارش ہے ہمیں بھی رو برو رکھنا
کبھی جو یاد آئے تو چلے آنا یہاں ملنے
ہماری ہے قسم تم کو ہماری آرزو رکھنا
عقیدت بھی محبت بھی، مؤدت بھی ہے ہم سب کو
تم اپنے آپ کو ہر دم، ہمیشہ سرخرو رکھنا
تمہارے پاس اب ہوں گے ہماری یاد کے لمحے
ہماری یاد کو دل میں ہمیشہ چار سو رکھنا
کھلا کے پھول الفت کے سدا دل میں ہی تم رکھنا
یہ پیغام محبت کو چمن میں کو بکو رکھنا
دعا دیتے ہیں سب مل کر، صالحہ بھی کہتی
ہمیشہ، ہر گھڑی، ہر دم، تم خود کو با وضو رکھنا

آخر میں پروفیسر کرانتی کمار نے فرداً فرداً سب کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میں بیحد خوشی ہے کہ آپ سبھوں نے میرے اعزاز میں اتنی خوبصورت محفل آراستہ وپیراستہ کی، میں تا عمر اس عزت افزائی کے لمحات کو یاد رکھوں گا، اسی کے ساتھ ہی پروگرام اپنے اختتام تک پہنچا،

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button