قومی

پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی جانب سے انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کے خلاف کلکٹر آفس کے روبرو احتجاج کیا گیا

پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی جانب سے ای ڈی کے حالیہ کارروائی کے خلاف کلکٹر آفس کے روبرو ضلع صدر حافظ عمیر کی صدارت میں احتجاج کیا گیا۔ پروگرام کے آغاز میں ریاستی کمیٹی ممبر عبدالہادی نے خطاب کیا۔

 

انہوں نےای ڈی کی طرف سے کی گئی حالیہ کارروائی یکطرفہ قرار دیا۔ جس میں انہوں نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے حالیہ بنک کھاتوں کے منجمد کیے جانے کو جمہوری حقوق کی خلاف ورزی اور الزامات کے سلسلے کو حق کی آواز اٹھانے والے اداروں، لوگوں اور تنظیموں پر مرکزی حکومت کے ذریعے مرکزی ایجنسیوں کے غلط اور غیر جمہوری استعمال کی پُرزور مذمت کی۔ حکومت کے پاس ترقی اور ملک کو آگے بڑھانے کے لئے کوئی ایجنڈا نہیں رہا اس لیے معاشی بدحالی، اقتصادی گراوٹ کو چھپانے کے لئے مذہبی فرقہ پرستی اور نفرت کو بڑھاوا دینے کے کام کیے جارہے ہیں۔

 

حالیہ کارروائی جس میں ای ڈی کی رپورٹ خود پرانا دعویٰ120کروڑ کی تردید کرتا ہے۔ جس میں 60 کروڑ کی بات کی گئی ہے۔ اور ای ڈی آدھی بات بتا رہا ہے یہ 60کروڑ تیرہ سال کی رقم ہےاور پاپولر فرنٹ آف انڈیا ہر سال آپنا آئ ٹی ریٹن کرتا ہےاس میں گودی میڈیا حکومت کا آلہ کار بن کر غلط رپورٹ پیش کررہا ہے۔ یہ سب عوام کے درمیان پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی شبیہ خراب کرنے اور بدنام کرنے کی سازشوں کا حصہ ہے۔ لیکن حالات اور وقت کیسے کیوں نہ ہو انشاءاللہ ہمارا موقف اٹل رہنگا اور ثابت قدمی سے حالات کا سامنا کرنگے اس طرح کے خیالات کا اظہار عبدالہادی، سید بلال، حافظ عمیر ودیگر ذمہ داروں نے کیا۔ اس کے علاوہ حنیف انعامدار نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

 

علاوہ ازیں آل انڈیا امامس کونسل کے ضلع صدر حافظ اکبر نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی حمایت میں خطاب کیا اور تنظیم کے سماجی و فلاحی کاموں کی سراہنا کی اور عوام سے اپیل کی کہ وہ تنظیم کی حمایت میں آگے آئے اور شانہ بہ شانہ ساتھ دے۔ آخر میں پی ایف آئ ضلع سیکرٹری جمشید پٹھان کے اظہارِ تشکر سے پروگرام کا اختتام عمل میں آیا۔ نظامت کے فرائض سید بلال نے انجام دیے۔ اس موقع پر پی ایف آئی جالنہ ضلع صدر حافظ عمیر، ضلع سیکرٹری جمشید پٹھان، سید بلال،مبین خان حافظ جنید عامر خان اور مہمان خصوصی ایڈوکیٹ خرم اور عرفان بھائی کثیر تعداد میں عوام نے شرکت کی۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button