بہار و سیمانچل

نشےمیں مست شرابی کرتارہا ہنگامہ پولس دیکھتی رہی تماشہ (ارریہ)۔

نشے میں مست شرابی کرتا رہا ہنگامہ پولس دیکھتی رہی تماشہ /ضلع میں نشہ آور ادویات کا استعمال کر نوجوان وبچے کرہے ہیں زندگی تباہ

فوٹو بشکریہ راحل عرفان

ارریہ (راحل عرفان)صوبائی حکومت نے صوبہ میں نشے پر مکمل طور پے پابندی عائد کر رکھی ہے لیکن صوبہ کے ضلع ارریہ میں ان دنوں نشہ آور ادویات دکانوں میں ٹافی کی طرح  فروخت ہو رہی ہیں اور کھلے عام نشے میں لگی پابندی کی دھجیاں اڑائی جارہی ہے جس کا شکار ہو کر نوجوان وبچے تک اپنی زندگی تباہ کرنے پر تلے ہوئے ہیں اب تو تھانہ کے سامنے سے شرابی ہنگامہ کرتے نکل جاتے ہیں گزشتہ دنوں جوکی ہائی اسکول چوک پرٹریفک جام ہٹارہے چوکیدار کے سامنے  ایک شرابی آدھے گھنٹے تک بیچ سڑک پر ہنگامہ مچاتا رہا جس سے راہگیروں کو کافی پریشانی ہورہی تھی لیکن چوکیدار تماشائی بنے دیکھتے رہے چوکیدار نہ تو شرابی کو پکڑ نے کی کوشش کی اور نہ ہی اس بات کی جانکاری تھانہ کو دی تاہم کچھ دیر بعد شرابی کو اس کے اہل خانہ گھر تو لیکر چلے گئے لیکن حیرت زدہ عینی شاہدین  یہ سوجنے پر مجبور ہو گئے کہ تھانہ سے محض 100میٹرکے فاصلے کا یہ حال ہے تو اور جگہوں کا کیا حال ہوگا  دوسرا واقعہ جوکی سے متصل بھبھڑا چوک میں پیش آیا جہاں شراب کے نشے میں سڑک کنارے لیٹے ایک شرابی کو ہوش میں لانے کیلئے لوگ اس پر پانی ڈال رہے تھے لوگوں کا کہنا ہیکہ چائے ہوٹلوں میں جہاں شراب لال چائے کے نام سے استعمال ہورہی ہے وہیں نشہ آور ادویات بھی بآسانی مل رہی ہے جس کا علم پولس کوبھی ہے اس بابت جوکی تھانہ انسپکٹر شیام نندن یادو سے دریافت کرنے پر انہوں نے کہاکہ یہ بے بنیاد بات ہے جہاں بھی نشہ خور اور نشہ فروخت کی اطلاع ملتی ہے پولس کارروائی کرتی ہے پولس نشہ کے خلاف سخت ہےتاہم پولس کے دعوے اپنی جگہ لیکن سنسان جگہ اور چوک چوراہے پر پڑے شراب کی بوتل اور نشہ آور ادویات وانجکشن پولس کے دعوے کو جھوٹی ثابت کرنے کیلئے کافی ہے /تصویر میں جوکی شہر کے بیچ سڑک پر ہنگامہ کرتے شرابی دوسری میں سنسان جگہ استعمال کے بعد پڑے نشہ آور ادویات کے ڈبے 

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close