ممبئی

مہاراشٹر حکومت کو دھچکا : سابق وزیر داخلہ انیل دیش مکھ کے خلاف جاری رہے گی سی بی آئی تحقیقات

ممبئی،یکم؍اپریل (ہندوستان اردو ٹائمز) مہاراشٹر حکومت کو بڑا دھچکالگا ہے۔ سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ کے خلاف سی بی آئی جانچ جاری رہے گی۔ سپریم کورٹ نے تحقیقات میں مداخلت سے انکار کر دیا ہے۔ عدالت نے مہاراشٹر حکومت کی عرضی کو خارج کر دی ہے۔ دیش مکھ کے خلاف جانچ ایس آئی ٹی کو سونپنے کے مہاراشٹر کے مطالبے کو مسترد کر دیا گیا ہے۔

سپریم کورٹ نے کہا کہ ہم اس معاملے کو ہاتھ تک نہیں لگائیں گے۔ اس سے قبل بامبے ہائی کورٹ نے بھی مہاراشٹر حکومت کی عرضی کو خارج کر دیا تھا۔ مہاراشٹر حکومت نے سابق وزیر داخلہ انیل دیش مکھ کے خلاف سی بی آئی کی انسداد بدعنوانی کی جانچ عدالت کی نگرانی والی ایس آئی ٹی کے حوالے کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔یہ معاملہ دیش مکھ کے خلاف پولیس کے تبادلوں اور تعیناتی کے لیے رشوت لینے کے الزامات سے متعلق ہے جب وہ وزیر داخلہ تھے۔

مہاراشٹر حکومت نے کہا تھا کہ مہاراشٹر کے سابق ڈی جی پی سبودھ کمار جیسوال اب سی بی آئی کے ڈائریکٹر ہیں۔ سی بی آئی کی جانچ میں جانبداری کا امکان ہے۔ جیسوال پولیس اسٹیبلشمنٹ بورڈ کا حصہ تھے اور تبادلوں اور تعیناتی کی نگرانی کرتے تھے۔ اگر سی بی آئی ڈائریکٹر ممکنہ ملزم نہیں ہے تو گواہوں توضرور ہوں گے ۔ جسٹس ایس کے کول اور جسٹس ایم ایم سندریش کی بنچ نے اس معاملے کی سماعت کی۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button