بنگال

ممتا سرکار ترقی کے نام پر اقلیتوں کے منھ میں بیڑی اور ہاتھ میں بندوق بم تھما رہی ہے:طفیل احمد خان قادری

کولکاتا 14 / اپریل ( پریس ریلیز ) مغربی بنگال کے دورہ پر آئے بی جے پی کے سینئر رہنماء ، شعلہ بیاں مقرر ، کہنہ مشق عالم دین اور بہار بی جے پی اقلیت شعبہ کے صدر حضرت مولانا طفیل احمد خان قادری نے کولکاتا سمیت ریاست کے مختلف علاقوں کا دورہ کرنے کے بعد یہاں خانقاہ ستاریہ چشتیہ کے زیب سجادہ شیخ اختر حسین چستی سے ملاقات اور آستانہ عالیہ پر فاتحہ خوانی کے بعد جاری اپنے پریس بیان میں کہا کہ مرکز سے اقلیتوں کی فلاح و بہبود کے لئے وزیر اعظم منصوبہ کے تحت جو رقوم آتی ہے وہ خرد برد کردیا جاتا ہے صحیح طریقے سے مرکزی ترقیاتی منصوبوں کا فائدہ مغربی بنگال کے اقلیتوں کو نہیں پہونچ رہا ہے

اقلیتوں کی ترقی کے نام پر ممتا بنرجی سرکار ریاست میں اقلیتوں کے منھ میں بیڑی ، ہاتھ میں بندوق بم اور تاش کے پتے تھما کر بے وقوف بنا رہی ہے جبکہ مرکز کی شری مان نریندر مودی جی کی سرکار نے اقلیتی طلبہ و طالبات کیلئے پانچ ہزار کڑور انتیس لاکھ روپے جاری کئے ہیں اس کا فائدہ یہاں نظر نہیں آ رہا ہے جناب طفیل احمد خان قادری نے جاری اپنے پریس بیان میں کہا کہ نہ جانے ممتا سرکار کس کے اشارے پر کام کر رہی ہے اور ووٹ بینک کی خاطر بنگلہ دیشی گھس پیٹھی کو بھی نظر انداز کر رہی ہے

انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت ملک کی تمام اقلیتوں سمیت مسلمانوں کے فلاح و بہبود کیلئے اپنے جامع منصوبہ سب کا ساتھ ، سب کا وشواس اور سب کا وکاس پر پابند عہد ہے اس کے ذریعے دینی مدارس کو ہاییٹیک کرنے ، مدارس کے فارغین علماء و حفاظ کو ایک ہاتھ میں قرآن تو دوسرے ہاتھ میں کمپیوٹر کے ذریعے بےروزگاری سے بچانے کیلئے کاربند ہے انہوں نے کہا کہ سیکولرازم کا نعرہ لگا کر ، بی جے پی کے خلاف جھوٹا پروپیگنڈہ کرکے نام نہاد سیکولر پارٹیوں نے ملک کے اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کو معاشی ، سیاسی اور تعلیمی میدان میں پیچھے کیا ہے جس کی تلافی شری مان نریندر مودی جی کی سرکار کر رہی ہے مغربی بنگال سمیت ملک بھر کے اقلیتوں کو مرکزی حکومت کی تمام اسکیموں سے فائدہ اٹھانا چاہیے اور ممتا سرکار کو اقلیتوں کے استحصال سے باز رہنا چاہئے

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button