ممبئی

کنگنا کی ہائی کورٹ میں بڑی کامیابی، بی ایم سی کودینا ہوگا دفتر توڑنے کا جرمانہ

ممبئی،27 ؍نومبر( آئی این ایس انڈیا ) ہائی کورٹ نے بالی ووڈ اداکارہ کنگنا رناوت کے پالی ہل میں واقع دفتر مسمارکرنے سے متعلق معاملے پر اپنا فیصلہ سنا یا ہے۔ بمبئی ہائی کورٹ کے فیصلے کے مطابق کنگنا کے دفتر میں ہونے والے نقصان کا اندازہ لگایا جائے گا۔ عدالت نے صاف طور پر کہا ہے کہ وہ انہدام میں ہونے والے نقصان کے بارے میں کنگنا کے بیان کی حمایت نہیں کرتا ہے۔عدالت نے اعتراف کیا کہ یہ ساری چیزیں کنگنا کو دھمکی دینے کے لئے کی گئیں اور بی ایم سی کی نیت ٹھیک نہیں تھی۔ دی گئی نوٹس اور دفتر کے انہدام کی اصل وجہ کنگنا کو دھمکی دینی تھی۔ عدالت نے کہا کہ کنگنا کو معاوضہ دینے کے لئے دفتر میں ہونے والے نقصان کا جائزہ لیا جانا چاہئے۔ جو بھی نقصانات ہوئے ہیں وہ بی ایم سی کے ذریعہ پورا کیا جائے گا۔ عدالت نے کہا کہ کنگنا دفتر کی تعمیر نو کے لئے بی ایم سی میں درخواست دیں گی۔ بقیہ آفس کا حصہ جسے بی ایم سی غیر قانون قرار دے رہی ہے، اس کو قانونی بنانا چاہئے۔ عدالت کا یہ فیصلہ دفتر کے انہدام کے بعد تقریبا 2 ماہ سے جاری بحث و مباحثے کے بعد سنایا گیا ہے۔جہاں تک کنگنا کی جانب سے دیئے گئے قابل اعتراض بیانات اور پوسٹوں کا تعلق ہے تو عدالت نے کہا کہ انہیں سوچ سمجھ کر بولنا چاہیے۔عدالت نے کہا کہ اصل موضوع آفس کو توڑنا ہے نہ کہ ٹویٹ میں کہی گئی باتیں۔ بہت سارا کام وہاں ملتوی ہوگیا ہے۔ عدالت نے کہا کہ کنگنا کی جانب سے دیئے گئے بیانات غیر ذمہ دارانہ ہیں، اس طرح کے بیانات کو نظرانداز کرنا بہتر ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close