ممبئی

ممبئ میں ٢٢-٢٣فروری کوجمعیت علماء ہند کے مرکزی ارکان و تحفظ جمہوریت کا کل ہند تاریخ ساز اجلاس

(جالنہ16 فروری شیخ احمد جالنوی کے ذریعہ )یہ حقیقت ہے کہ جمعیت علماء ہند نے ملک و ملت اور اسلامی تشخص کی حفاظت کے لئے جو وسیع پیمانے پر خدمات انجام دی ہے وہ تاریخ کا ایک زریں باب ہے نیز ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت کو پیار ومحبت اور صلح و آشتی کے ذریعہ ختم کرنے اور ملک کے سیکولر ازم کی حفاظت و مضبوط کرنے میں جمعیت علماء ہند کا جو بنیادی کردار رہا ہے اسکو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا ہے، انہی مقاصد کو سامنے رکھتے ہوئے جمعیت علماء ہند کی مجلس عاملہ نے جمعیت علماء ہند کے منتظمہ کا عظیم الشان اجلاس ٢٢- ٢٣ فروری کو منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے، اس اجلاس میں بہت اہم امور مثلاً شہریت ترمیمی بل پر غوروخوض اورحکومت وقت کا پورے ملک میں این آر سی اور اس کی لازمیت کے ارادے سے این آر پی اور مردم شُماری ٢٠٢٠ پر تبادلہ خیال اس کے لئے اقدامات، اور مسلمانوں کے درپیش مسائل پر غور نیز عالم اسلام کے تشویشناک حالات اور قومی یک جہتی اور آپسی بھائی چارہ کے قیام کے لیے عزم و فیصلہ، شریعت میں حکومت و دیگر اداروں کی مداخلت پر غور،مزید اس طرح کے سلگتے مسائل کے بارے میں غور و فکر کرکے آئیندہ کے لئے لائحہ عمل طے کیا جائے گا،نیز ٢٣ فروری کی شام ٦ بجے آزاد میدان ممبئی میں تحفظ جمہوریت کے عنوان پر عظیم الشان اجلاس منعقد ہونے جارہا ہے جسمیں جمعیت علماء ہند اکابرین کے علاوہ ہندو، سکھ عیسائی و دیگر مذاھب کے اعلی قائدین شرکت کررہے ہیں جبکہ دونوں اجلاس کی صدارت قائد ملت و جمعیت علماء ہند کے صدر محترم حضرت مولانا سید ارشد مدنی دامت برکاتہم فرمائیں گے مولانا سید نصراللہ حسینی سہیل ندوی نائب صدر جمعیت علماء مرہٹواڑہ نے جمعیت علماء ہند ارشد مدنی کے ارکان مرکزیہ ومنتظمہ سے درخواست کی ہے کہ ان دونوں اجلاس میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں اور بلا تفریق مذہب وملت سب لوگوں سے گذارش کی ہے کہ ٢٣ فروری بروز اتوار کے شام کے تحفظ جمہوریت کے عظیم الشان اجلاس میں لاکھوں کی تعداد میں شرکت کریں،

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close