ممبئی

مرکزی ایجنسیاں پریشان کررہی ہیں ، بی جے پی کے ساتھ چلے جائیں، شیوسینا کے پریشان ایم ایل اے کا ادھو ٹھاکرے کو خط

ممبئی20جون(ہندوستان اردو ٹائمز) شیوسینا کے ایک ایم ایل اے نے کہا ہے کہ پارٹی کوبی جے پی کے ساتھ دوبارہ ہاتھ ملاناچاہیے تاکہ مرکزی تحقیقات ایجنسیوں کے ذریعہ اپنے قائدین کو ہراساں ہونے سے بچایا جاسکے۔ مہاراشٹراکے وزیراعلیٰ ادھوٹھاکرے کو لکھے گئے خط میں شیوسینا کے ایم ایل اے پرتاپ سرنائک نے کہا ہے کہ انہیں اپنے سابق ساتھی سے مل کر ہاتھ جوڑنا ہوگا۔ خاص طور پر ممبئی اور تھانے سمیت آئندہ کارپوریشن انتخابات کے لیے سمجھوتہ کرنا ہوگا۔ مہاراشٹرا اسمبلی میں تھانے کی نمائندگی کرنے والے سرنائیک نے کہاہے کہ اگرچہ بی جے پی اور شیوسینا اب اتحادی نہیں ہیں ، لیکن ان کے رہنماؤں کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں۔

لہٰذا اسے استعمال کرنا چاہیے۔سرنائک نے اپنے خط میں لکھا ہے کہ بہت ساری مرکزی ایجنسیاں میرے پیچھے ہیں۔میرے علاوہ شیوا سینا کے دیگر رہنما انیل پرب اور رویندر وایکر اور ان کے اہل خانہ کو بھی ان ایجنسیوں کے ذریعہ ہراساں کیا جارہا ہے۔انہوں نے لکھا ہے کہ اگر شیوسینا اور بی جے پی دوبارہ اکھٹے ہوجائیں تو پھر ان رہنماؤں کو اس طرح کی ہراسانی سے بچایا جاسکتا ہے۔پچھلے سال انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے منی لانڈرنگ کے معاملے میں سرنائک کی متعدد املاک پر چھاپہ مارا تھا۔ ایجنسی نے ان کے بیٹے ویہانگ سرنائک سے بھی پوچھ گچھ کی تھی۔ شیوسینا جو مہاراشٹر وکاس اگھاڑی (ایم وی اے) کی مخلوط حکومت کی قیادت کررہی ہے ، نے اس وقت مرکز پر ایم ایل اے کو نشانہ بنانے کا الزام عائد کیا تھا۔سرنائک نے خط میں لکھا ہے کہ کانگریس ، جو ایم وی اے میں اتحادی جماعت ہے ، کارپوریشن انتخابات میںتنہا ہو گی ، جبکہ اتحاد کی دوسری پارٹنر ، این سی پی ، شیوسینا کے ایم ایل اے کو شکست دینے اور توڑنے کی کوشش کر رہی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close