ممبئی

کوئی اتحادمستقل نہیں ہوتا، اودھوٹھاکرے کے بیان پرکانگریس کاتبصرہ

ممبئی20جون(ہندوستان اردو ٹائمز) مہاراشٹر میں ریاستی کانگریس کے صدر نانا پٹولے نے کہا ہے کہ ریاست میں پانچ سالوں کے لیے شیوسینا ، این سی پی اور کانگریس کی ایم وی اے اتحادی حکومت تشکیل دی گئی اور یہ مستقل اتحاد نہیں ہے۔ ان کا یہ تبصرہ وزیراعلیٰ اور شیوسینا کے صدر ادھو ٹھاکرے کے ہفتے کے روز اس بیان کے بعدسامنے آیا ہے کہ انہوں نے کہا کہ لوگوں کی مشکلات حل کرنے کے بجائے ، جو تن تنہا الیکشن لڑنے کی بات کرتے ہیں انہیں چپل سے مارا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے کہا تھا کہ تمام فریقوں کو اپنے عزائم کو ایک طرف رکھتے ہوئے معیشت اور صحت پر توجہ دینی چاہیے۔ پٹولے نے صحافیوں کو بتایا کہ ٹھاکرے کے بیان میں کوئی وضاحت نہیں ہے کہ وہ کس کے بارے میں بات کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاہے کہ یہاں تک کہ بی جے پی اکیلے ہی الیکشن لڑنے کی بات کرتی ہے۔ انہوں نے کہاہے کہ چار جماعتوں شیوسینا ، کانگریس ، نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) اور بی جے پی نے اسمبلی انتخابات اکیلے ہی لڑے تھے۔

پٹولے نے کہا ہے کہ ہم نے بی جے پی کو روکنے کے لیے 2019 میں مہا وکاس اگھاڑی (ایم وی اے) حکومت تشکیل دی تھی۔ یہ کوئی مستقل اتحاد نہیں ہے۔ ہر پارٹی کو اپنی تنظیم کو مستحکم کرنے کا حق ہے اور کانگریس نے ہمیشہ کوویڈ 19 متاثرہ لوگوں کو کئی مقامات پر خون ، آکسیجن اور پلازما فراہم کرکے ریلیف فراہم کرنے کو ترجیح دی ہے۔ پیٹولے نے کہاہے کہ ٹھاکرے نے شیوسینا کے 55 ویں یوم تاسیس کے موقع پر پارٹی صدر کی حیثیت سے وزیراعلیٰ کی حیثیت سے مذکورہ بالا ریمارکس دیئے۔شیوسینا اور کانگریس کئی دہائیوں سے تلخ حریف رہے ہیں لیکن 2019 میں ادھو ٹھاکرے کے زیرقیادت پارٹی نے بی جے پی سے علیحدگی اختیار کرنے کے بعد دونوں پارٹیوں نے مہاراشٹرا میں این سی پی کے ساتھ مل کر حکومت تشکیل دی۔ تاہم ، شیوسینا کے راجیہ سبھا ممبر سنجے راوت نے اتوارکے روزکہاہے کہ ان کی پارٹی نے مہاراشٹرا کی شان اور پارٹی کی مضبوطی کے لیے ہمیشہ تمام لڑائیوں کویکجہتی سے لڑاہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close