ہندوستان اردو ٹائمز

عدالت نے مجید کی ضمانت برقرار رکھی، آخر کون ہے مجید ؟

ممبئی23فروری (ہندوستان اردو ٹائمز) بمبئی ہائی کورٹ نے منگل کے روز 27 سالہ عریب مجیدکی ضمانت کے خصوصی عدالت کے حکم کو برقرار رکھا۔مجید پر الزام ہے کہ وہ داعش سے تعلقات رکھتا ہے۔جسٹس ایس ایس شنڈے اور جسٹس منیش پٹلی پر مشتمل ڈویژن بنچ نے قومی تحقیقاتی ٹریبونل (این آئی اے) کے ذریعہ دائر درخواست کو نمٹا دیا جس میں اس نے مبینہ طور پر داعش کے ممبر مجید کی ضمانت منظورکرنے کے فیصلے کو چیلنج کیا تھا۔

بنچ نے کہاہے کہ وہ زیر سماعت مقدمے کی سماعت کی بنیاد پر مجید کو ضمانت دینے کی نچلی عدالت کے حکم کو برقرار رکھی ہوئی ہے ، نہ کہ اس کیس کی خوبیوں پر۔ہائیکورٹ نے مجیدکو بطور ضمانت ایک لاکھ روپے جمع کروانے اور تھانہ ضلع جہاں وہ رہتا ہے وہاں کے علاقے سے باہرنہ جانے کی ہدایت کی ہے۔

این آئی اے کے مطابق ، مجید مبینہ طور پر دہشت گرد تنظیم داعش میں شامل ہونے کے لیے شام گیا تھا اور وہ دہشت گردی کی سرگرمیاں انجام دینے کے لیے ہندوستان واپس آیا تھا۔مجید کوکوانسدادغیر قانونی سرگرمی ایکٹ اور پی ڈی ایس کی دفعات کے تحت 2014 میں این آئی اے نے گرفتار کیا تھا۔ مجید کو گذشتہ سال مارچ میں این آئی اے کی خصوصی عدالت نے ضمانت دے دی تھی۔