ممبئی

مجلس کے ایم ایل اے کی جماعت اسلامی ہند مالونی سے ملاقات

ممبئی23جنوری(آئی این ایس انڈیا) ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال میں ڈرامائی تبدیلی کے بعدحالیہ بہار ریاستی اسمبلی الیکشن میں مجلس اتحاد المسلمین پانچ سیٹیں جیتی ہے۔ اس سے پرجوش مجلس کے قائد اسد الدین اویسی نے اعلان کیا ہے کہ ان کی پارٹی مغربی بنگالی کے الیکشن میں بھی حصہ لے گی۔ اس اعلان سے ایک بحث چل پڑی ہے کہ مجلس کے اس اقدام سے مسلم ووٹوں کی تقسیم ہوگی اور دیگر ووٹروں کابی جے پی کے تئیں ارتکاز ہوگا۔شاید اسی افواہ کا اثر ہے کہ بہار اسمبلی کیلئے نومنتخب ایم ایل اے ممبئی کے دورے پر ہیں جہاں وہ مسلم علاقوں میں اہم مسلم تنظیموں سے ملاقات کرکے ان خدشات کا ازالہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ جماعت اسلامی ہند مالونی کی بھی کوشش تھی کہ وہ ان سے ملاقات کریں اور نئے سیاسی منظر نامہ پر کچھ گفتگو ہوسکے۔ہفتہ تئیس جنوری کو کل ہند مجلس اتحاد المسلمین کے بہار کے نومنتخب ایم ایل اے نے جماعت اسلامی ہند مالونی کے دفتر میں جماعت اور ایس آئی او (اسٹوڈنٹ اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا) کے ارکان کارکنان و ذمہ داروں سے ملاقات کی جہاں جماعت کے ارکان اور نوجوان طلبہ نے ان کا استقبال کیا اور ساتھ ہی اس خدشہ کا اظہاربھی کیا کہ مجلس کے اس طرح انتخابات میں حصہ لینے سے مسلم ووٹ تقسیم ہو کر بے اثر ہوجائے گا۔مجلس کے نومنتخب ایم ایل اے ہیں اظہار آصفی کوچا دھامن، اختر الایمان آمور سے اور انظر نعیمی بہادر گنج۔انہوں نے ان خدشات کے مدنظر یہ یقین دہانی کرائی کہ مجلس اتحادالمسلمین مسلمانوں کی سیاسی بے وزنی دور کرنے کیلئے آئی ہے وہ مسلمانوں کو بے وقعت نہیں ہونے دے گی۔ جماعت اسلامی ہند مالونی اور مجلس اتحادالمسلمین کے درمیان خوشگوار فضا میں گفتگو ہوئی۔ مجلس کے ایم ایل اے جماعت کی سرگرمیوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ یہ مسلمانوں کو ان کی ذمہ داری یاد دلانے کیلئے حقیقی معنوں میں سرگرم عمل ہے اور یہ کہ مسلمانوں کی واحد کیڈر بیسڈ تنظیم ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close