ممبئی

بی جے پی ارنب اورچین کی دراندازی پر’تانڈو‘کیوں نہیں کرتی؟ شیوسیناکاتبصرہ،پلوامہ حملے کوالیکشن جیتنے کی’سیاسی سازش‘ قراردیا

ممبئی21جنوری(آئی این ایس انڈیا) شیوسینا نے اپنے ترجمان’ سامنا‘میں بی جے پی کے ترجمانوں پر حملہ کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی کو’وشنو کااوتار‘ قراردیا ہے۔ جمعرات کے روز پلوامہ حملے کے حوالے سے ارنب گوسوامی کی چیٹ کی اخباری رپورٹ پرادارتی مضمون میں اس نے لکھاہے کہ ’پلوامہ‘ میں ہمارے فوجیوں کا قتل ایک سیاسی سازش تھی۔ ان 40 فوجیوں کا خون لوک سبھا انتخابات جیتنے کے لیے بہایا گیا تھا ، ایسے الزامات بھی اس وقت لگائے گئے تھے۔ اب ارنب گوسوامی کا واٹس ایپ چیٹ سامنے آیا ہے ، وہ ان الزامات کومضبوط کرنے والاہے۔ بی جے پی ایسا کچھ نہیں کرتی،رام ضرور سر پیٹ رہے ہوں گے۔شیوسینا نے سامنا میں کہاہے کہ گوسوامی نے قومی سلامتی سے متعلق بہت سی خفیہ باتیں عام کیں ، بی جے پی اس پر’تانڈو‘کیوں نہیں کرتی؟ چین لداخ میں داخل ہوا اور ہندوستانی سرزمین پر قبضہ کیا۔ چین پیچھے ہٹنے کوتیارنہیں،اس پر کوئی تانڈو کیوں نہیں ہے؟ آئیے یہ معلوم کریں کہ دراصل وہ کون لوگ تھے جنھوں نے گوسوامی کو خفیہ معلومات دے کر قومی سلامتی کو تباہ کیا تھا۔ گوسوامی کے ذریعہ 40 فوجیوں کی ہلاکت پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے یہ ملک اورمذہب کی توہین ہے۔شیوسینا نے مزید لکھا ہے کہ یہ سب دیکھنے کے بعد خودرام اپنے ماتھے پر پیٹ ڈال رہے ہیں۔ تاہم بھارتیہ جنتا پارٹی نے اس پرتانڈونہیں کیا ۔ارنب گوسوامی نے قومی سلامتی سے متعلق بہت سی خفیہ باتیں عوام کو عام کیں ، بی جے پی اس پر ’تانڈو‘ کیوں نہیں کرتی؟سامنا نے مزید لکھا ہے کہ بی جے پی جوتانڈو کی مخالفت میں کھڑی ہے ، وہ مدر انڈیاکی توہین کرنے والے ارنب گوسوامی کے سلسلے میں منہ میں انگلی ڈال کر کیوں خاموش بیٹھی ہے؟ پاکستانیوں نے ہندوستانی فوجیوں اور ان کی شہادت کی اتنی توہین نہیں کی ہو گی جتنی گوسوامی نے ان کی توہین کی ہے۔سامنامیں شیوسینا نے لکھا ہے کہ شیوسینانے ہندو دیوتاؤں کے تناظر میں کبھی بھی کسی بھی کامکالمہ برداشت نہیں کیا۔ ایم ایف حسین بلاشبہ ایک عظیم مصور تھا ، لیکن شیوسینانے ہندو دیوتاؤں کے پورٹریٹ بنانے کے طریقے پر اعتراض کیا۔ یہ تنازعہ اتنا بڑھ گیاکہ ایم ایف حسین کو ملک چھوڑنا پڑا۔ اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ہندو دیوتاؤں کی توہین پر کسی بھی صورت میں سمجھوتہ ممکن نہیں ہے ، لیکن بی جے پی کے ذریعہ شروع کیے گئے ’تانڈو‘میں صداقت کی ڈگری کیا ہے ، اس پرشبہ ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close