ممبئی

کانگریس میں جاری رسہ کشی پر اب سنجے نروپم نے کہا، پارٹی کے سینئرلیڈران کابیان غلط

ممبئی،24نومبر(آئی این ایس انڈیا) کانگریس کے لیڈر سنجے نروپم نے کہا کہ پارٹی بحران کے دور سے گزر رہی ہے۔ بڑے لیڈران گھماپھراکر غلط بیانات دے رہے ہیں۔ ان کا نشانہ راہل گاندھی ہیں۔ ان سینئرلیڈران کے برتاؤ سے ناراض راہل گاندھی نے استعفیٰ دے دیا۔راہل گاندھی کے سوا کوئی بھی پارٹی کو آگے نہیں لے جا سکتا ہے۔سنجے نروپم نے کہا کہ راہل گاندھی کے علاوہ کوئی بھی کانگریس پارٹی نہیں سنبھال سکتا، یہ سچ ہے۔ ان تمام لیڈران کو جمع ہونا چاہئے اور راہل گاندھی کو بتانا چاہئے کہ انہیں آکر کانگریس کے صدر کا عہدہ سنبھالنا چاہئے۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہاکہ پارٹی بڑے لیڈران کے تبصرے کی وجہ سے زیادہ ہار رہی ہے۔ ان کا اصرار ہے کہ پارٹی میں انتخابات ہونے چاہئیں، مجھے یقین ہے کہ انتخابات کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔ کیا بی جے پی میں کبھی انتخاب سنا گیا ہے؟ انتخابات کے بہانے پارٹی کی اعلی قیادت پر حملے قابل مذمت ہیں اور میں ان کی مخالفت کرتا ہوں۔سنجے نروپم نے مزید کہاکہ جو بھی لیڈران بول رہے ہیں انہیں پارٹی کے اندرونی فورم میں جگہ ملی ہے، ہر ایک کی حیثیت ہوتی ہے، آپ کمیٹی کی میٹنگ میں اپنی بات رکھ سکتے ہیں۔ جو کچھ کہا جارہا ہے وہ پارٹی کو کمزور کرنے کی مہم ہے اور اس مہم کو روکنا چاہئے۔کانگریس لیڈر نے یہ بھی کہاکہ آپ سوالات اٹھا رہے ہیں لیکن آپ کے پاس کوئی متبادل منصوبہ نہیں ہے، مجھے یقین ہے کہ اگر انتخابات ہوئے اور ان انتخابات میںاگر راہل گاندھی اور امیدوار کھڑا ہوتے ہیں تو وہی نتائج ہوں گے۔بتادیں کہ سنجے نروپم کا بیان کانگریس کے لیڈر غلام نبی آزاد کے بیان کے بعد سامنے آیا ہے۔ غلام نبی آزاد نے کہا تھا کہ کانگریس پارٹی کے لیڈران سے کارکنان سے رابطہ منقطع کردیا ہے۔ فائیو اسٹار ہوٹلوں میں میٹنگ کرکے انتخابات نہیں لڑے جاتے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close