بنگال

مغربی بنگال اسمبلی میں ED-CBI کیخلاف قرارداد منظور

بی جے پی لیڈران ای ڈی اور سی بی آئی کا غلط ا ستعمال کر رہے ہیں: ممتا بنرجی

کولکاتہ ، 19ستمبر ( ہندوستان اردو ٹائمز) مغربی بنگال اسمبلی نے ریاست میں مرکزی ایجنسیوں کی مبینہ دست درازیوں کے خلاف ایک قرارداد منظور کی ہے۔ اس تجویز پر مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ مجھے نہیں لگتا کہ پی ایم مودی سی بی آئی، ای ڈی کا غلط استعمال کر رہے ہیں، لیکن کچھ بی جے پی لیڈر اپنے مفادات کے لیے ایسا کر رہے ہیں۔ میں پی ایم مودی سے گزارش کرتی ہوں کہ حکومت اور پارٹی کے کام کاج کو الگ رکھیں، یہ ملک کے لیے اچھا نہیں ہوگا۔یہ تجویز قاعدہ 169 کے تحت ریاستی اسمبلی کی میز پر رکھی گئی تھی۔

مغربی بنگال حکومت نے یہ قدم ایسے وقت میں اٹھایا ہے جب ای ڈی اور سی بی آئی ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) کے رہنماؤں کے خلاف کچھ ہائی پروفائل معاملات کی جانچ کر ر ہا ہے۔ پچھلے دو مہینوں میں مغربی بنگال میں ٹی ایم سی کے کئی لیڈروں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

قبل ازیں سابق وزیر اور ٹی ایم سی کے معطل لیڈر پارتھا چٹرجی کو اساتذہ بھرتی کے مبینہ گھوٹالہ میں گرفتار کیا گیا تھا۔ اس کے بعد ترنمول بیربھوم کے ضلع صدر ان برتا منڈل کو جانوروں کی اسمگلنگ کی مبینہ تحقیقات میں گرفتار کیا گیا تھا۔ قرارداد میں ترنمول کے سینئر لیڈر فرہاد حکیم اور سبرت مکھرجی کی گزشتہ سال سی بی آئی کے ذریعہ گرفتاری کا بھی حوالہ دیا گیا تھا۔

ای ڈی نے وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کے بھتیجے اور ترنمول کے رکن پارلیمنٹ ابھیشیک بنرجی، ان کی اہلیہ، مغربی بنگال کے وزیر قانون مالوئے گھاٹک اور ریاست میں تعینات کئی آئی پی ایس افسران سے بھی کوئلے کی اسمگلنگ کے مبینہ گھوٹالے میں پوچھ گچھ کی تھی۔ ای ڈی نے آج سابق وزیر پارتھا چٹرجی اور ان کی معاون ارپیتا مکھرجی کے 48.22 کروڑ روپے کے اثاثوں کو ضبط کیا ہے، جو مغربی بنگال کے اساتذہ کی بھرتی گھوٹالہ کے ملزم ہیں۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button