کشمیر

معصوم لوگوں کی آئے دن ہلاکتیں انتہائی افسوسناک : سید الطاف بخاری

خاتون ٹیچر کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت، متاثرہ کنبے کے ساتھ اپنی گہری ہمدردی کا اظہار

سرینگر (هندوستان اردو ٹائمز) اپنی پارٹی کے صدر سید محمد الطاف بخاری نے کولگام میں دہشت گردوں کے ہاتھوں ایک خاتون کی ہلاکت پر اپنے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ اپنے ایک بیان میں اُنہوں نے اس قتل کو "بہیمانہ” قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ آئے دن معصوم انسانوں کی ہلاکتوں نے عوام میں خوف و دہشت کی لہر پھیلادی ہے۔ یہ بات ناقابل فہم ہے کہ آخر معصوم شہریوں کو قتل کرکے کسی کو کیا حاصل ہوسکتا ہے؟

انہوں نے کہا، رجنی بالا ایک سکول ٹیچر تھیں، اس کا کیا قصور تھا، جس کی وجہ سے اسے قتل کیا گیا؟ آخر عام لوگوں کی قتل و غارتگری سے کیا حاصل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے؟ انہوں نے کہا کہ اس ماہ یہ دہشت گردوں کے ہاتھوں ساتویں ہلاکت ہے۔ اس سے قبل کشمیری پنڈت راہل بٹ اور تین پولیس اہلکاروں، جو ڈیوٹی پر بھی نہیں تھے، سمیت چھ افراد کو ہلاک کیا گیا۔ سید الطاف بخاری نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ معصوم لوگوں کی ہلاکتوں کے خلاف اپنی آواز بلند کریں۔

انہوں نے کہا، ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ ہم اس خونین سلسلے کے خلاف اپنی آواز بلند کریں۔ انہوں نے رجنی بالا کے کنبے کے ساتھ اپنی گہری ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا، "متاثرہ کنبے کے ساتھ اظہار ہمدردی کرنے لئے الفاظ کم پڑرہے ہیں کیونکہ اُن پر مصیبت کا جو پہاڑ ٹوٹ پڑا ہے، اس کا مداوا کرنے کے لئے کوئی بھی الفاظ ناکافی ہیں۔ ” سید الطاف بخاری نے دعا کی کہ اللہ متاثرین کو یہ مصیبت جھیلنے کی ہمت دے اور مقتول خاتون کی روح کو سکون عطا کرے۔ اںہوں نے کہا کہ اس واقعہ میں ملوث افراد کو ان کے کیفر کردار تک پہنچانا ناگزیر ہے۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button