مضامین و مقالات

آدمیت اورمحبت عیدکا پیغام ہے تحریر: محمد طاسین ندوی

بسم اللہ الرحمن الرحیم 
تحریر: محمد طاسین ندوی
الحمدللہ ! 
ہم نے رمضان المبارک کے ایام جس اتحاد و انسجام کے ساتھ گزارا وہ قابل قدر ہے آج رمضان کا مہینہ اپنے اختتام کو پہنچا اور یہ پیغام عام دے گیا کہ آپسی اتحادو اتفاق بنائے رکھنا ۔
 اے امت مسلمہ تم نے ایسا فریضہ انجام دیا جو اب پورے ماہ و سال کی گردش کے بعد ہی میسر ہوگا اور نہ جانے یہ حسین ایام تم میں سے کس کو میسر ہو اور کس کو نہ ہو ،تم اللہ کی ودیعت کردہ باقی ماندہ زندگی کے ایام کو اس کار گہ عالم کے خالق کی مرضیات پر ہی گامزن رکھنا اس میں تمہارہے لئے دونوں جہاں کی فلاح و بہبودی ہے۔
تم نے روزہ و سحری اور نمازوتہجد سے اپنی راتوں کو روشن کیا ،زندہ رکھا شب قدر کی برکتوں  اور رحمتوں  سے کشکول گدائی کو خوب بھرا بے کسوں، یتیموں ،بیواؤں،مفلسوں اور درماندوں کا بہت خیال رکھا تم نے لباس و پوشاک اور صدقہ وخیرات سے ان کے دلوں میں فرحت و مسرت کے شادیانے بجائے ، اب وہ ماہ مبارک رخصت ہوا ، اس کےبعد بھی اللہ پاک تم سبہوں کو اس مہتم بالشان کام کی توفیق دیتا رہے اور تم آپس میں اعتصام بحبل اللہ کا عملی نمونہ ہمیشہ پیش کرتےرہو اور فسطائی طاقت و قوت سے نہ گھبرا کر اس کے ایوان کو نعرۂ مستانہ سے متزلزل کردواور اتفاق و اتحاد کی ایسی مثال بن کر افق عالم پر ابھرو کےوہ  یہ کہنے پر مجبور ہوجائیں کے یہ اللہ کے پرستار حضرت آقائے نامدار احمد مجتبی محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کے  سچے پکے متبیعن اور پیرو کار ہیں، ان کے لطیف اشاروں پر اپنی جانیں قربان کرنے والے ہیں جادۂ حق پر یہی لوگ ہیں سالاری کا پرچم ان کے ہاتھ میں زیب دیتا ہے ، عید تو عبارت ہے اسی اتحاد،انسجام اور اتفاق سے عیدببانگ دہل  بزبان حال یہ کہتی ہے واعتصموا بحبل اللہ جمیعا و لاتفرقوا … امت محمدیہ کے جیالو ایک ہوجاؤ  آپسی دوری کو ختم کرلو اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھام لو،  دنیا تھرا جائیگی اور اگر اس دستور ایزدی پر عمل پیرا نہ ہوئے تو یاد رکھو ..! پسپائی، فرقہ واریت،عنصریت،یکے بعد دیگرے سب سر اٹھائیں گے وہ  تمہیں  ہلاک وبرباد کر کہ قعر مذلت کے عمیق کھوہ میں لاگرائیں گے.
اب بھی وقت ہے جسطرح رمضان و عید میں متحد رہے اپنے نفس کو قابو میں  رکھ کراپنی اخروی ترقیوں کا سامان مہیا کیا اسے  اپنی روز مرہ کی زندگی میں بھی نافذ کرو اور جنت اپنے نام الاٹ کروالو .
قارئین محترم!  
ہم نے رمضان و عید کے نہایت ہی روح پرورش ،پرکیف اور دلکش روز و شب کو بہت ہی خوش اسلوبی سے گزار نے کی کوشش کی، باری تعالی اپنے انعام و اکرم کے لئے ایک گھڑی میسر کی ہے .ہرطرح کی لغویات،فحش،منکر افعال و اعمال سے اجتناب کرتے ہوئے اس دن کی رعنائی. خوبصورتی، دلکشی اور دلفریبی سے حدود و قیود میں رہتے ہوئے خاطر خواہ فائدہ اٹھائیں اور دعا کریں کے عید نے اتحادو اتفاق اور حسن عمل کا جو دلپذیر درس دیا اسکو ہمیشہ یاد رکھیں تاکہ ہمارا مستقبل روشن ہو اور آخرت میں اللہ تعالی کے حضور کم سے کم جوابدہ ہوں ..للہ الامر من قبل ومن بعد  .

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close