مضامین و مقالات

عقیدہ ختم نبوت ؐ ایمان کی بنیاد ہے ۔ مولانا محمدجمال الدین رشادی

16۔اکتوبر2020؁ء نماز جمعہ سے قبل ممتاز عالم دین حضرت مولانا محمدجمال الدین صاحب صدیقی رشادی مہتمم مدرسہ عربیہ تعلیم الدین گنگانگر بنگلور32نے خطبہ جمعہ میں عقیدہ ختم نبوت صلی اﷲ علیہ وسلم اور ہماری ذمہ داری کے موضوع پر بصیرت افروز خطاب کرتے ہوئے فرمایا اﷲ تعالیٰ نے اپنے بندوں کی اصلاح اور رہنمائی،رشد وہدایت، فلاح و کامیابی کیلے حضرات انبیاء کرامؑ کا مبارک سلسلہ جاری فرمایا، حضرت آدمؑ سے لیکر حضرت عیسیٰ ؑ تک انبیاء کرامؑ کسی قبیلہ، کسی قوم،کسی علاقہ، کسی زمانہ،کسی ملک کیلے تشریف لاتے رہے اور فرائض منصبی انجام دیتے رہے،سب سے آخر میں تاجدار نبوت،امام الانبیاء و المرسلین، خاتم النبین و المرسلین،حضرت محمد رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم پوری کائنات کیلے ساری انسانیت کیلے سارے زمانے کیلے آخری اور عالمی نبی اور رسول بنکر مبعوث ہوے، اب قیامت تک آپؐ ہی کی نبوت اور رسالت کا سکہ چلے گا،اﷲ تعالیٰ کی ذات اور صفات میں کوئی شریک نہیں،اسی طرح سرکار دوعالم رحمت للعالمینؐ کی نبوت اور رسالت میں بھی کوئی شریک نہیں ہے، ہم اچھی طرح سمجھیں خدا کے بعد کوئی خدا نہیں،اسی طرح حضرت محمد رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم کے بعد کوئی نبی نہیں ہے،رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم نے خود اپنے بارے میں ارشاد فرمایا ہے میںآخری نبی ہوں میرے بعد کوئی نبی نہیں ، کسی بھی زمانہ ،کسی بھی علاقہ،کسی بھی ملک میں اگر کوئی ملعون ومردود نبوت اور رسالت کا جھوٹا دعوی کرتا ہے پھر تو یہ خدا کی لعنت کا مستحق ہے اور اہل ایمان کا متفقہ فیصلہ ہے اسلام سے یہ ملعون خارج ہے، مولانا نے دوران خطاب فرمایا فتنوں کا ظہور ہر زمانے میں ہوا ہے، امام الانبیاء والمرسلینؐ کی حیات مبارکہ میں مدینہ منورہ میں مسیلمہ کذاب اور دوسروں نے جھوٹی نبوت کا دعویٰ کیا اﷲ رب العزت نے رہتی دنیا تک کے انسانوں کیلے ان کو عبرت کا نشان بنادیا اور اہل ایمان بندوں کو انکے انجام بد سے باخبر کیا ہے، خلیفہ اول سیدنا حضرت ابوبکر صدیقؓ کے دور خلافت میں کئی فتنے سراٹھاے جس میں سب سے بڑا فتنہ عقیدہ ختم نبوت صلی اﷲ علیہ وسلم کا تھا اس وقت حضرت ابوبکر صدیقؓ نے اس کا پوری جرأتــ ایمانی سے مقابلہ کیا حضرات صحابہ کرامؓ نے بڑے ہی جذبہ ایمانی کا مظاہرہ کیا اﷲرب العزت نے انکو کامیابی عطا فرمائی،موجودہ وقت میں وہ ہمارے لیے اسوہ اور نمونہ ہے، حضرت ابو بکر صدیقؓ کا وہ ایمان آفریں جملہ دین میں ذرہ برابر بھی فرق آجائے اور میں زندہ رہوں یہ نہیں ہو سکتا ہے، فتنہ قادیانیت ملعون مرزا غلام احمد قادیانی کو نبی ماننے والے خود کو احمدی کہتے ہیں،بھولے بھالے مسلمانوں کو دھوکہ دیکر انکے دین و ایمان پر ڈاکہ ڈالتے ہیں اور یہ ارتداد کی جال میں پھنس کر اپنے دین و ایمان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں ان کو معلوم بھی نہیں ہوتا حقیقت کیا ہے، اسی طرح حدیث کا انکار کرنے والے خود کو اہل قرآن کہتے ہیں،اور حدیث رسولؐ کو شرعی حجت ماننے کے منکر ہیں،کوئی خود کو حضرت عیسیٰ اور حضرت مہدی ہونے کا دعوی کر رہا ہے اور اہل ایمان کو گمراہ کر رہا ہے، یہ سب کے سب ملعون اور اسلام سے خارج ہیں، مولانا نے دوران خطاب فرمایا رابطہ عالم اسلام کے منعقدہ اجلاس مکہ مکرمہ 1974؁ء میں مسلم ممالک نے قادیانی فرقہ جو خود کو احمدی کہتا ہے بالاتفاق کفر کا فتویٰ دیا ہے، قادیانی مسلمان نہیںہیں،آج یہ منکر ین ختم نبوتؐ عام مسلمانوں کو دھوکہ دینے کیلے کلمہ پڑھتے ہیں اور یہ باور کراتے ہیں دنیا بھرکے مسلمان انھیں صحیح العقیدہ مسلمان سمجھیں،یاد رکھیں کوئی شخص حضرت محمد رسول اﷲ صلی اﷲ علیہ وسلم کو اپنا نبی اور رسول نہ مانے آپؐ کی ختم نبوت پر اس کا ایمان نہ ہو وہ اپنا کتنا ہی خوبصورت نام کیوں نہ رکھ لے، کتنی ہی اچھی اپنی وضع قطع کیوں نہ بنالے ہر گز مسلمان صاحب ایمان نہیں ہو سکتا ہے،امام المحدثین حضرت علامہ سید انور شاہ صاحب کشمیریؒ شیخ الحدیث دارالعلوم دیوبند فرماتے تھے فتنہ قادیانیت ذلیل ترین فتنہ ہے، میرے استاذ محترم حضرت علامہ قاری محمد امداد اﷲ صاحب رشادی ؒ شیخ القراء دارالعلوم سبیل الرشاد بنگلور فرماتے تھے سرکار دوعالم صلی اﷲ علیہ وسلم کی عظمت کیا ہے، آپؐ کا مقام و مرتبہ کیا ہے، امت مسلمہ پیغمبر اسلامؐ کی ذات گرامی اور عقیدہ ختم نبوتؐ سے اگر واقف ہوگی تو دنیا کی کوئی طاقت امت کو گمراہ نہیں کرسکتی ہے،آج ضرورت ہے عقیدہ ختم نبوتؐ کی حفاظت کیلے ہم ہر ممکن کوشش کریں، امت مسلمہ کو فتنہ قادیانیت سے باخبر کریں،ان کے دین وایمان کو بچانے کی فکر کریں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close