قومی

مبینہ منی لانڈرنگ کیس : سونیا گاندھی سے کل 6 گھنٹے پوچھ گچھ ، آج ای ڈی نے پھر بلایا

نئی دہلی ، 26 جولائی (ہندوستان اردو ٹائمز) نیشنل ہیرالڈ سے متعلق منی لانڈرنگ کیس میں کانگریس صدر سونیا گاندھی سے آج کی پوچھ گچھ ختم ہوگئی۔ ایجنسی نے ان سے تقریباً چھ گھنٹے تک پوچھ گچھ کی۔ ذرائع کے مطابق ای ڈی نے انہیں آج یعنی بدھ کو دوبارہ پوچھ گچھ کے لئے بلایا ہے۔سونیا گاندھی، بیٹے راہول گاندھی اور بیٹی پرینکا گاندھی کے ساتھ تقریباً 11 بجے دہلی کے اے پی جے عبدالکلام روڈ پر واقع ودیوت لین میں واقع ای ڈی کے دفتر پہنچیں۔ اس کے بعد، وہ تقریباً آدھے وقت تک لنچ کے لیے ای ڈی آفس سے نکلی اور پھر تقریباً 3.30 بجے واپس آئی۔

عہدیداروں نے بتایا کہ پرینکا ای ڈی آفس کے دوسرے کمرے میں رہ رہی تھی تاکہ وہ اپنی ماں سے مل سکیں اور ضرورت پڑنے پر انہیں ادویات یا طبی امداد فراہم کر سکیں۔سونیا (75) سے اس معاملہ میں پہلی بار 21 جولائی کو دو گھنٹے سے زیادہ پوچھ گچھ کی گئی تھی۔ اس کے بعد انہوں نے ایجنسی کے 28 سوالات کے جوابات دیئے۔ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ ینگ انڈین پرائیویٹ لمیٹڈ میں مبینہ مالی بے ضابطگیوں کی تحقیقات کر رہا ہے۔اس معاملہ میں ایجنسی نے راہل گاندھی سے 50 گھنٹے سے زیادہ پوچھ گچھ بھی کی ہے۔ کانگریس نے ای ڈی کی کارروائی کو سیاسی بدنیتی کی کارروائی قرار دیا ہے۔راہل گاندھی اور کئی دیگر کانگریس ارکان پارلیمنٹ نے پارلیمنٹ ہاؤس سے مارچ نکالا۔ یہ سبھی راشٹرپتی بھون کی طرف بڑھنے کی کوشش کر رہے تھے، لیکن پولیس نے انہیں وجے چوک پر روک دیا،اس کے بعد ان لیڈروں نے وہاں دھرنا دیا، راہل گاندھی زمین پر بیٹھ گئے۔ اس کے بعد پولیس نے راہل اور دیگر لیڈروں کو حراست میں لے لیا۔

حراست میں لیے جانے سے پہلے راہل گاندھی نے الزام لگایا کہ مودی جی بادشاہ ہیں اور ہندوستان میں پولیس راج ہے۔راہل نے تصویر کے ساتھ ٹویٹ کیا کہ آمریت دیکھیں، پرامن احتجاج نہیں کر سکتا، مہنگائی اور بے روزگاری پر بات نہیں کر سکتا، پولیس اور ایجنسیوں کا غلط استعمال کر کے، ہمیں گرفتار کر کے بھی آپ ہمیں خاموش نہیں کر سکیں گے۔صرف سچ ہی اس پر فریب آمریت کو ختم کرسکتا ہے ۔راہل گاندھی نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ ملک کے ’بادشاہ‘ نے حکم دیا ہے،جو بے روزگاری، مہنگائی، غیر معقول جی ایس ٹی،اور تباہ کن اگنی پتھ پر سوال پوچھے گا، اسے جیل میں ڈال دو، حالانکہ میں ابھی تک حراست میں ہوں۔ اب ملک میں عوام کی آواز اٹھانا جرم ہے لیکن وہ ہمارے جذبے کو کبھی نہیں ختم کرسکتے ۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button