قومی

لوک سبھامیں حکومت سے اردو کی ترقی پر توجہ دینے کا مطالبہ

نئی دہلی28مارچ (ہندوستان اردو ٹائمز) لوک سبھامیں ایک رکن پارلیمنٹ نے حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ ملک میں اردو زبان کی ترقی پر توجہ دے۔ ایوان کے ایک اور رکن نے کووڈ کے دوران بند ہونے والی ٹرینوں کی سروس کو بحال کرنے کی ضرورت بتائی۔اے آئی ایم آئی ایم کے امتیاز جلیل نے وقفہ صفرکے دوران دعویٰ کیاہے کہ اس ملک میں اردو کو نظرانداز کیا جارہا ہے اور اردو اسکول بند کیے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری اشتہارات کی عدم دستیابی کی وجہ سے اردو اخبارات بند ہو رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اردو زبان کو مذہب کی نظر سے نہ دیکھا جائے اور حکومت کو اس کی ترقی پر توجہ دینی چاہیے۔شیو سینا کے شری رنگ اپا بارنے نے مطالبہ کیا کہ کیندریہ ودیالیوں میں ممبران اسمبلی کا کوٹہ 10 سے بڑھا کر 10 کیا جائے ورنہ اسے مکمل طور پر ختم کر دیا جائے۔کانگریس کے رامیا ہری داس نے کہاہے کہ کووڈ کے معاملات میں کمی کے ساتھ تمام علاقوں میں حالات معمول پر آ رہے ہیں لیکن تمام مسافر ٹرینیں جو وبائی امراض کے دوران پابندیوں کی وجہ سے بند کر دی گئی تھیں ابھی تک بحال نہیں کی گئی ہیں جس سے لوگوں کوپریشانی ہو رہی ہے۔

انہوں نے تمام ٹرینوں کو فوری طور پر دوبارہ چلانے اور تمام اسٹیشنوں پر ان کے اسٹاپیجز کا مطالبہ کیاہے۔بیجوجنتا دل کے انوبھو موہنتی نے خواجہ سراؤں کے لیے عوامی مقامات پر علیحدہ بیت الخلاء کی تعمیر کی ضرورت پر زور دیا۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button