عجیب و غریب

فوج کا باورچی نابالغ لڑکی کے تعاقب کے الزام میں گرفتار

نئی دہلی ، 6ستمبر (ہندوستان اردو ٹائمز) ہندوستانی فوج کے ایک 21 سالہ کنٹریکٹی باورچی، جس کا نام آس محمد ہے، کو دہلی پولیس، شمالی ضلع نے 17 سالہ لڑکی کا پیچھا کرنے اور اسے ہراساں کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیاگیا۔ دہلی پولیس کے سائبر سیل شمالی ضلع کو ایک 17 سالہ لڑکی سے شکایت موصول ہوئی تھی۔

لڑکی کے مطابق اسے ایک ایسے شخص نے ہراساں کیا اور بدنام کیا جو آرمی اہلکار ہونے کا دعویٰ کرتا تھا۔ڈی سی پی نارتھ ساگر سنگھ کوہلی کے مطابق متاثرہ نے ٹک ٹاک کے ذریعے ملزم سے دوستی کی تھی اور نمبروں کا تبادلہ کیا تھا۔ وہ چند بار جی ٹی بی نگر، نئی دہلی میں ملاقات کی تھی ۔ جب شکایت کنندہ کی والدہ کے سامنے ان کی دوستی کا انکشاف ہوا تو اس نے ملزم کے بارے میں دریافت کیا تو پتہ چلا کہ اس کا اصل نام آس محمد ہے نہ کہ آشو رانا جو کہ جعلی ہے۔

اس کے بعد شکایت کنندہ نے ملزم سے بات کرنا بند کر دیا کیونکہ اس نے اپنی شناخت جعلی دی تھی۔ تاہم، ملزم نے متاثرہ کو ہراساں کرنا شروع کر دیا اور متاثرہ کے نام سے انسٹاگرام پر جعلی سوشل میڈیا اکاؤنٹس بنا کر شکایت کنندہ کو بدنام کرنے لگا۔ ملزم آس محمد نے ان جعلی سوشل میڈیا کے ذریعے متاثرہ کے دوستوں اور اساتذہ سے رابطہ کیا اور ان سے رقم بٹورنے کی کوشش کی اور جب وہ ایسا کرنے میں ناکام رہا تو اس نے ان کے ساتھ بدسلوکی کی اور اسے بدنام کرنے کے لیے شکایت کنندہ کی تصویر کے ساتھ سوشل میڈیا پر توہین آمیز پیغامات پوسٹ کیے۔

سائبر نارتھ پولیس اسٹیشن میں دفعہ 419، 500، 354-ڈی، تعزیرات ہند کی 509 اور 12 پوسکو اور آی ٹی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ مزید تفتیش کے بعد ایک ٹیم تشکیل دی گئی اور ملزم آس محمد کو ہفتے کے روز گرفتار کر لیا گیا۔ اس کے پاس سے ایک موبائل فون اور دو سم کارڈ برآمد ہوئے ہیں۔ ملزم 12ویں پاس ہے اور ممبئی کے کلینا کینٹ میں فوج میں کنٹریکٹ کی بنیاد پر باورچی کے طور پر خدمات انجام دے رہا ہے۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button