قومی

عدالت ِ عظمیٰ کی پھٹکار پر نوپو ر شرما کی وضاحت ، جانیں نوپورشرما نے کیا کہا

نئی دہلی ، 2 جولائی (ہندوستان اردو ٹائمز) بی جے پی کی معطل لیڈر نوپور شرما کو یکم جولائی کو سپریم کورٹ نے پھٹکار لگائی تھی۔ سپریم کورٹ نے نوپور شرما کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے کہا کہ انہیں پورے ملک سے معافی مانگنی چاہئے۔ اس پر نوپور شرما کی وضاحت آ گئی ہے۔ نوپور شرما نے اس معاملہ پر اپنی خاموشی توڑتے ہوئے کہا کہ میرے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا۔ میرے خلاف جھوٹی خبریں پھیلائی گئیں۔

نوپور شرما نے اپنی وضاحت میں کہا کہ میں نے ایک ٹی وی مباحثے کے دوران پیغمبر اسلامؐ کے بارے میں جو بیان دیا تھا، اسے سماج دشمن عناصر نے توڑ مروڑ کر ایڈٹ کیا تھا اور اسے مختلف سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر شیئر کیا تھا۔ جس کے بعد مجھے اور میرے اہل خانہ کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں۔

نوپور شرما نے کہا کہ میرے خاندان کو عصمت دری اور قتل کی دھمکیاںبھی مل رہی ہیں۔ جس کی وجہ سے میری اور میرے خاندان کی جان کو خطرہ ہے۔ ملک بھر میں جو بھی تنازعہ ہوا وہ میرے بیان کی وجہ سے نہیں، بلکہ سماج دشمن عناصر نے میرے بیان کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کر کے اسے وائرل کیا، جس کی وجہ سے ملک بھر میں میرے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہیں۔نوپور شرما نے مزید کہا کہ مجھے ملنے والی دھمکیوں پر کچھ کرنے کے بجائے مختلف ریاستوں میں میرے خلاف مقدمات درج کیے جا رہے ہیں۔ اس قسم کے ایف آئی آر سے میری آواز کو دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ اور آئین کی طرف سے مجھ سے اظہار خیال کا حق چھیننے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

نوپور شرما کا کہنا ہے کہ میں نے اپنے بیان پر معافی بھی مانگی تھی۔ جس میں واضح طور پر کہا گیا کہ اگر میرے بیان سے کسی کے جذبات کو ٹھیس پہنچی ہے تو میں اپنے الفاظ واپس لیتی ہوں۔ میرا مقصد کسی کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانا نہیں تھا۔بی جے پی سے معطل رہنما نے کہا کہ میرے خلاف جو بھی کیس دفعات درج ہیں، سب غلط ہیں۔ خیال رہے کہ اس سے قبل یکم جولائی کو نوپور شرما نے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی تھی کہ مجھے دھمکیاں مل رہی ہیں، میری جان کو خطرہ ہے۔ایسے میں میرے خلاف مختلف ریاستوں میں درج مقدمات کو دہلی منتقل کیا جانا چاہیے۔ تاہم سپریم کورٹ نے ان کی درخواست کو مسترد کرتے ہوئے انہیں ہائی کورٹ جانے کو کہا۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button