عجیب و غریب

عجیب و غریب : 12 سالہ بچی کی جنسی استحصال کے بعد قتل کیا پھر گھر میں کیا دفن ، ایک ہفتہ بعد ملزم شملہ سے گرفتار

بلندشہر، 03؍مارچ(آئی این ایس انڈیا) مغربی اتر پردیش کے ضلع بلندشہر کے ایک گاؤں میں ایک 12 سالہ بچی چھ دن سے لاپتہ تھی۔ منگل کی شام اس بچی کی لاش گاؤں کے ایک مکان کے قریب گڑھے میں پڑی تھی۔ ملزم کو بدھ کی صبح ہماچل پردیش کے شملہ سے گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس نے بتایا کہ 22 سالہ ملزم کا نام ہریندر ہے۔ وہ دہلی میں مزدور ی کرتا تھا اور جس شام کولڑکی غائب ہوئی اس دن وہ گھر پر تھا۔ بلندشہر کے ضلعی مجسٹریٹ رویندر کمار نے بتایاکہ ایسا لگتا ہے کہ بچی کا قتل کیا گیا ہے۔ جنسی استحصال کے امکان کو بھی مسترد نہیں کیا جاسکتا۔ ہم سخت کارروائی کریں گے۔بلند شہر پولیس نے بتایا کہ بچی 25 فروری کی شام اپنے کنبے کے ساتھ کھیتوں میں کام کرتی تھی۔ جب اسے پیاس لگی تو اس نے گھر والوں سے کہا کہ وہ پانی پینے گھر جارہی ہے۔

بلند شہر پولیس چیف سنتوش کمار سنگھ نے کہا کہ اس خاندان نے 28 فروری کو ان کے لاپتہ ہونے کی شکایت درج کی تھی۔ وہ اپنی والدہ اور دو بہنوں کے ساتھ کھیتوں میں کام کررہی تھی۔ کھیتوں سے گھر سے 100 میٹر کی دوری تھی جہاں اس کی لاش برآمد ہوئی ہے۔ اس کے ساتھ ہی سنگھ نے کہا کہ وہ پانی پینے گھر گئی تھی۔ لیکن جب وہ واپس نہیں آئی تو اس کی بہن اسے بلانے گئی۔ لیکن وہ وہاں نہیں ملی۔

اس کے بعد اس کی تلاش شروع کردی گئی۔پولیس افسر نے یہ بھی کہا کہ شام کو جب وہ اسی جگہ پہنچے تو انہوںنے دیکھا کہ وہاں ایک شراب مدہوش شخص موجود تھا ، لیکن بچی نہیں ملی۔ گھروالے 28 فروری کو پولیس میں شکایت درج کروانے سے پہلے 2-3 دن تک تلاش کرتے رہے۔ انہوں نے بتایا کہ آج جب مقامی لوگوں نے پولیس کے ساتھ مل کر لڑکی کی تلاش شروع کی تو انہوں نے ایک مکان کے اندر ایک نشان دیکھا ، جہاں ایک گڑھا کھودا ہواتھا۔ جب اسے کھودا گیا تو اس میں بچی کی لاش ملی۔ ہم ابھی دیگرچیزوں کی تفتیش کر رہے ہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close