عجیب و غریب

دبئی کی ایسی گلی جہاں سارا سال بارش برستی رہے گی

دبئی میں موسمِ گرما کے دوران درجہ حرارت اکثر ناقابلِ برداشت حد تک بڑھ جاتا ہے، جس کے باعث باہر نکلنا بھی مشکل ہوتا ہے۔ تاہم ایسے موسم کے دوران شہر کی آب و ہوا میں توازن پیدا کرنے ایک ایسی گلی بنائی جائے گی جہاں ہر اس وقت بارش ہوگی جب درجہ حرارت 27 ڈگری سے تجاوز کرے گا۔
عرب نیوز کے مطابق یہ گلی ‘دا ہارٹ آف یورپ’ میں قائم کی جائے گی جو کہ دبئی میں سیاحت کو فروغ دینے کے لیے شروع کیے جانے والے منصوبے کا حصہ ہے۔

دا ہارٹ آف یورپ کا پراجیکٹ دبئی کے ساحل سے چند کلومیٹر کے فاصلے پر ‘دا ورلڈ آئی لینڈز’ نام کی جزیرہ نما جگہ میں ہوگا۔ یہ گلی ایک کلومیٹر لمبی ہوگی اور اس میں یورپی طرز پر ریستوران اور دیگر دکانیں ہوں گی، جہاں چلتے ہوئے لوگوں پر ہلکی ہلکی بارش ہوتی رہے گی۔

اس پراجیکٹ پر کام کرنے والے کلائن ڈینسٹ گروپ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ‘ریننگ سٹریٹ’ سالوں کی تحقیق اور تجربے کے بعد بنائی جا رہی ہے جو کہ توقع ہے کہ اس سال تک مکمل ہو جائے گی۔

تاہم اس طرح کا پراجیکٹ اپنی نوعیت کا پہلا منصوبہ نہیں ہے۔یہ آسٹرین آرکیٹیکٹ کیمیلو سیتے کے کام سے متاثر ہو کر شروع کیا جا رہا ہے۔ وہ ایسے شہروں کا تصور عمل میں لا چکے ہیں جہاں ٹیکنالوجی کے ذریعے آب و ہوا پر قابو پایا جا سکتا ہے۔

کلائن ڈینسٹ گروپ کے مطابق جیسے ہی درجہ حرارت 27 ڈگری سے تجاوز کرے گا، گلی میں موجود عمارتوں میں سے چھپے ہوئے پائپز کے ذریعے بارش کی صورت میں ٹھنڈا پانی برسنے لگے گا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close