عجیب و غریب

13 ماہ میں ایک کروڑ تنخواہ لے کر یوپی حکومت کو دھوکہ دینے کے الزام میں خاتون ٹیچر گرفتار

کاس گنج،6جون(آئی این ایس انڈیا) اتر پردیش میں 25 مقامات پر پڑھانے والی اور13 ماہ کے دوران ایک کروڑ روپے تنخواہ لینے والی خاتون ٹیچرانامکا شکلا کو ہفتہ کے روز کاس گنج پولیس نے گرفتار کیا ہے۔ ضلع کاس گنج کے تھانہ سورون کوتوالی کے انسپکٹر رپودمان سنگھ کا کہنا ہے کہ انامیکا شکلا پر دھوکہ دہی سے ملازمت کرنے اور جعلی ریکارڈوں سے بیک وقت 25 اضلاع میں تنخواہ لینے کا الزام ہے۔ پولیس اس سے پوچھ گچھ کررہی ہے۔

UP Police arrest teacher who worked simultaneously at 25 schools ...

معلومات کے مطابق، 25 اضلاع میں ملازمت کرنے کی ملزمہ ٹیچر نامیکا شکلا ہفتہ کے روز ضلع کاس گنج میں استعفیٰ دینے آئی تھی۔ اطلاع ملنے پر کاس گنج پولیس نے اسے گرفتار کرلیا۔ بی ایس اے انجلی سنگھ نے انامکا شکلا کے خلاف تھانے میں ایف آئی آر لکھنے کیلئے تحریردی ہے، جس پر پولیس کی طرف سے ایف آئی آر لکھی جارہی ہے۔

UP teacher, who drew Rs 1 cr salary by working in 25 schools ...

پولیس ذرائع کے مطابق انامیکا شکلا نے اپنے والد کا نام راجیش بتایا ہے۔ذرائع کے مطابق پولیس تحویل میں ملزمہ انامیکا شکلا نے بتایا کہ اس وقت وہ گونڈا سے بی ایڈ کر رہی ہے۔ اسے یہ نوکری مین پوری ضلع کے ایک فرد نے دلائی تھی، اس کا نام راج کو بتا رہی ہے۔ ضلع کاس گنج کے تھانہ سورون کوتوالی کے انسپکٹر رپودمان سنگھ کا کہنا ہے کہ ملزمہ خاتون سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

وضاحت کردیں کہ مین پوری کی انامیکا شکلا کی پوسٹنگ پریاگراج، امبیڈکر نگر، علی گڑھ، سہارنپور، باغپت اور دیگر اضلاع کے کے جی بی وی اسکولوں میں پائی گئی ہے۔ ان اسکولوں میں اساتذہ کوکانٹریکٹ کی بنیاد پر مقرر کیا جاتا ہے اور ہر ماہ 30 ہزار روپے تنخواہ ملتی ہے۔ 13 ماہ کے دوران، اس ٹیچر پر مبینہ طور پر 1 کروڑ روپے کمانے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ اس دھوکہ دہی کا انکشاف اساتذہ کا ڈیٹا بیس تیار کرتے ہوئے کیا گیا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close