عجیب و غریب

بغیرآدھار کارڈ نہیں کٹیں گے بال، تامل ناڈو حکومت نے جاری کیا حکم

چنئی، 2 جون (آئی این ایس انڈیا) ملک میں کورونا مریضوں کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ دریں اثنا لاک ڈاؤن میںرعایت کی گنجائش بڑھ گئی ہے۔ یکم جون سے تمل ناڈو میں سیلون اور بیوٹی پارلر کھول دئے گئے ہیں لیکن بال کٹوانے کے لئے آدھار کارڈ لازمی ہوگا۔

تمل ناڈو حکومت نے سیلون کے لئے ایس او پی جاری کیا ہے۔تمل ناڈو حکومت کی طرف سے جاری کردہ ایس او پی کے مطابق، اگر آپ بال کٹوانا چاہتے ہیں تو آدھار کارڈ دکھانا ہوگا۔ سیلون مالک ہر گاہک کا نام، پتہ، فون نمبر اور آدھار کارڈ نمبر درج کرے گا۔ اگر وہ ایسا نہیں کرتا ہے تو اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

تمل ناڈو حکومت کی ایس او پی کے مطابق، کوئی بھی سیلون 50 فیصد عملہ (8 سے زیادہ عملہ نہیں) کے ساتھ کھلے گا۔ سیلون میں اے سی نہیں چلے گا۔ سیلون آنے والوں کے لئے ماسک لازمی ہوں گے اور انہیں پہلے ہاتھ صاف کرنا پڑے گا۔ اس کے بعد، وہ اروگیا سیتو ایپ کی تفصیلات دکھائیں گے۔سیلون کا مالک گاہک کو ایک ڈسپوز ہونے والا تہبند اور جوتے کا کور دے گا۔ اگرگاہک کا بل ایک ہزار روپے آتا ہے تو اسے ڈسپوزہونے والا تہبند اور پیروں کے کور کے لئے 150 روپے ادا کرنا ہوں گے۔

سیلون آنے والے لوگوں کا کہنا ہے کہ ہم دو ماہ بعد سیلون کھول کر خوش ہیں۔ ہم تمام رہنما خطوط پر عمل پیرا ہیں۔اہم بات یہ ہے کہ تمل ناڈو حکومت نے پہلے دیہی علاقوں میں سیلون کھولنے کی اجازت دی تھی، لیکن اب پوری ریاست میں سیلون اور بیوٹی پارلر کھولے جارہے ہیں۔ سیلون مالکان سے کہا گیا ہے کہ وہ سماجی دوری پر عمل کریں۔ نیز نائی کو ہر وقت ماسک اور صفائی برقرار رکھنے کا حکم دیا گیا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close