عجیب و غریب

اتر پردیش : بے رحم باپ نے 4 معصوم بیٹیوں کو ندی میں پھینکا، 3 کی موت !

کلیدی ملزم سرفراز 20دن پہلے ہی اپنی بیوی اور چار بیٹیوں کے ساتھ ممبئی سے واپس آیا ہے تھا۔ وہ ممبئی میں ٹرک ڈرائیور تھا، لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے گاؤں واپس آگیا تھا۔

سنت کبیرنگر ۔ 01 جون 2020 (ہندوستان اردو ٹائمز) اترپردیش کے ضلع سنت کبیر نگر میں دھنگھٹا علاقے میں ایک والد نے اپنی چار معصوم بیٹوں کو زندہ ندی میں پھینک دیا۔ اڈیشنل سپرنٹندنٹ آف پولیس نے استی شریواستو نے پیر کو یہاں بتایا کہ دھنگھٹا علاقے کے دیپ پور ڈیہوا گاؤں باشندہ سرفراز نامی شخص نے اتوار کی رات اپنے ایک دوست کے ساتھ ملک کر اپنی تین بیٹوں کو زندہ گھاگھرا ندی میں پھینک دیا۔

اطلاع ملنے کے بعد موقع پر پہنچی پولیس نے لاشوں کا پتہ لگانے کے لئے این ڈی آر ایف اور مقامی غوطہ خوروں کو تعینات کیا ہے۔ پولیس نے سرفراز اور اس کے دوست کو گرفتار کرلیا ہے۔ کلیدی ملزم سرفراز 20 دن پہلے اپنی بیوی اور چار بیٹیوں کے ساتھ ممبئی سے واپس آیا ہے تھا۔ وہ ممبئی میں ٹرک ڈرائیوری کا کام کرتا تھا۔ لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے وہ گاؤں واپس آگیا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ وہ ڈرگس کا عادی ہے۔

ذرائع کے مطابق اس کے اس انتہائی قدم کے پیچھے گھریلو تنازع اصل سبب ہے۔ پولیس کے مطابق جن لڑکیوں کو ندی میں پھینکنے کی وجہ سے موت ہوگئی ہے ان کی شناخت ثنا (7)، سبا (04) اور شمع(02) کی حیثیت سے ہوئی ہے۔ تاہم چوتھی بیٹی جو تقریباً 7 مہینے کی ہے، کسی طرح بچ گئی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close