عجیب و غریب

یوپی: گاؤں جانے کے لئے والدین کے ساتھ سرکاری بس کا انتظار کر رہی بچی کو ٹرک نے کچلا، ہوئی موت

مین پوری ،20 ؍مئی ( آئی این ایس انڈیا ) مغربی اتر پردیش کے مین پوری ضلع میں ایک تیز رفتار ٹرک کی زد میں آنے سے ایک 6 سالہ لڑکی کی موت ہو گئی۔بچی اور اس کے والدین سیتاپور ضلع میں واقع اپنے گاؤں جانے کے لئے ایک سڑک کے کنارے کھڑے ہو کر ریاستی حکومت کی جانب سے انتظام کی گئی بس کا انتظار کر رہے تھے۔بچی کے والدین ہریانہ میں کام کرتے تھے۔پیر کو یہ خاندان یوپی کے اپنے گاؤں تک پہنچنے کے لئے ہریانہ میں ایک ٹرک میں سوار ہوا تھاٹرک منگل کی صبح یوپی کے مین پوری ضلع کی جانب جا رہا تھا، اسی دوران پولیس اہلکاروں نے اس کو سرحد چیک پوسٹ پر روک دیا اور خاندان کو ٹرک سے اترنے کے لئے کہا۔رپورٹ کے مطابق پولیس نے اس خاندان کو سڑک کے کنارے انتظار کرنے کے لئے کہا اور بتایا کہ جلد ہی ان کے لئے ایک سرکاری بس کا انتظام کیا جائے گا۔جیسے ہی خاندان سڑک کے کنارے تک پہنچا اسی دوران اایک ٹرک نے چھ سالہ پرینکا کو ٹکر مار دی۔

پرینکا کے والد شیو کمار نے بتایاکہ میں ہریانہ میں دوسرے لوگوں کے کھیتوں میں کام کرتا تھا۔ہم صرف گھر جانے کی کوشش کر رہے تھے۔ کورونا وائرس کی وبا کی وجہ سے جاری لاک ڈاؤن نے ہماری زندگی کو بری طرح سے متاثر کیا ہے اور اس مشکل وقت میں ہم اپنے گھر جانے کے لئے بے تاب تھے۔غور طلب ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے ملک میں مارچ ماہ کے آخری ہفتے سے لاک ڈاؤن جاری ہے، اس کی وجہ سے مہاجر مزدوروں کے سامنے روزی روزی کا بحران پیدا ہو گیا اور ان کا روزگار ختم ہوگیا ہے۔روزگار چھننے کی وجہ سے وہ جو بھی ذرائع مل رہا ہے، اس سے اپنے گھر واپس آ رہے ہیں۔کچھ مزدور تو گھر پہنچنے کے لئے پیدل ہی سفر کر رہے ہیں۔سفر کے دوران ان مزدوروں کو سڑک حادثوں کا بھی شکار ہونا پڑا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close